ایک بدکردارشخص اور اس کی بخشش

ایک شخص جو کہ بدکردار اور فاسق و فاجر تھا۔ ایک دن وہ دریائے دجلہ پر ہاتھ پاؤں دھونے گیا، اتفاق سے حضرت امام احمد بِن حنبلؒ دریا پر وضو کر رہے تھے اور وہ شخص اُوپر بیٹھا تھا جس طرف سے پانی آرہا تھا، اُس کو خیال آیا کہ یہ بڑی بے ادبی کی بات ہے کی اللہ تعالٰی کا نیک بندہ امامِ وقت وضو کر رہا ہو اور میرے جیسا ایک نالائق اِنسان اِن سے اُوپر بیٹھ کر پاؤں دھوئے ۔

یہ خیال آتے ہی وہ اپنی جگہ سے اُٹھا اور حضرت امام احمد بِن حنبلؒ سے نیچے بہاؤ کی طرف آبیٹھا اور ہاتھ پاؤں دھو کر چلا گیا ۔ جب وہ شخص مر گیا تو ایک بزرگ کو خیال آیا کی فلاں آدمی بڑا فاسق و فاجر تھا دیکھیں تو سہی کی اُس کے ساتھ کیا معاملہ پیش آیا ؟ اُنھوں نے اُس کی قبر پر جا کر مراقبہ کیا اور اُس سے پوچھا: بتا ! تیرے ساتھ کیا معاملہ پیش آیا ؟ اُس نے کہا : اللّٰہ تعالٰی کا شُکر ہے کہ میری بخشش صرف ایک گھڑی حضرت امام احمد بِن حنبلؒ کے ساتھ ادب کرنے کی وجہ سے ہوئی اور سارا قصہ سُنا دیا ۔ ( ذکرِ خیر، صفحہ نمبر ۲۳۰ ، تذکرة الاولیاء ۔ )

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: