شرک کی اقسام

اگر عقیدہ میں خرابی تو سارے اعمال ضائع اس لیے سب سے پہلے عقیدے کو سمجھے شرک کیا ہے کتنی قسم کا شرک ہے اس کی ایک ایک قسم کو پہچانیے سب سے بڑا ظلم شرک ہے سورہ لقمان 13 جسے مالک کائنات نے ظلم عظیم کہا ہےاور شرک پر مرنے والے پر جنت حرام کر دی ہے اور اسکا ٹھکانہ جہنم ہےالمائدہ 72 شرک کی بہت سی اقسام ہیں اور اج کے معاشرے میں ہر طرف شرک کی غلاظت بری طرح پھیلی ہوئ ہےیہ شرک وہ واحد گناہ ہے جو ثواب سمجھ کر کیا جاتا ہے ذات کا شرک یہ شرک پروردگار کی ذات میں کیا جاتا ہے،،جیسے کہ عیسائیوں نے کہا کہ عیسی علیہ اسلام(نعوذ باللہ) اللہ کے بیٹے ہیں اور یہودیوں نے کہا کہ عزیر علیہ اسلام اللہ کے بیٹے ہیں ۔

اور مشرکیں مکہ نے کہا کہ فرشتے اللہ کی بیٹیاں ہیں اور ظلم کی حد ہوگئ جب امت محمدی نے کہا کہ اللہ نور ہے اور نبی صلی اللہ علیہ وسلم اس نور کا ٹکڑا ہیں اس ذات کے شرک کے بارے میں اللہ فرماتا ہے کہ زمین پھٹ پڑے آسمان شق ہوجاۓ اور پہاڑ ڈھے جائیں تو بعیدِ نہیں مریم 90 اللہ نے فرمایا کہ ابن آدم جب کہتا ہے کہ میری اولاد ہے تو وہ مجھے گالی دیتا ہے بخاری کتاب بدالخق ذات کا شرک اللہ کو گالی دینے کے برابر ہے قبر پرستی کا شرک اللہ کے نبی صلی علیہ وسلم اورولی اللہ کو ان کی وفات کے بعد بھی زندہ سمجھنا اور انہیں نفع و نقصان پہنچانے والا ماننا،داتا دستگیر مشکل کشا حاجت روا سمجھنا جب کہ قرآن و سنت گواہی دیتے ہیں کہ ہر ذی روح کو موت آنی ہے اور باقی رہنے والی ذات اللہ کی ہےاور مرنے کے بعد روح اور جسم کا تعلق ختم ہو جاتا ہےروح اللہ کے پاس پہنچادی جاتی ہے اور جسم قبر کے اندر گل سڑ جاتا ہے لیکن آج اکثریت کا عقیدہ ہے روح جسم میں لوٹا دی جاتی ہے اور زمینی قبر میں ہی عذاب و راحت کا معاملہ ہوتا یہ عقیدہ شرک کی بنیاد ہے عذاب و قبر کا معاملہ بر حق ہے لیکن زمینی قبر میں نہیں برزخ میں ہوتا ہے قرآن و حدیث کا یہی فیصلہ ہے۔

نبی صلی اللہ علیہ وسلم وفات پا کر جنت کے اعلی ترین مقام (الوسیلہ) میں زندہ ہیں مدینے والی قبر مین نہیں پھر بھی اکثریت کا ماننا ہے کہ نا صرف اللہ کے نبی مدینے والی قبر میں زندہ ہیں بلکہ درود و سلام خود سنتے ہیں امت کے اعمال ان کی بارگاہ میں پیش کیے جاتے ہیں ہر جگہ حاظر و ناظر ہیں یہ تمام صفات باری تعالی کی ہیں وہ ہر وقت ہر جگہ سے ہمیں دیکھتا ہے سنتا ہے وہ ہی ہمیشہ ہمیشہ زندہ رہنے والا ہے،اللہ کی نبی و ولی سب بشر تھے اور ہر بشر کو موت آنی ہے اس ایک قبر پرستی سے ہی اور کتنے شرک نکلے ہیں قبر والوں کو خوش کرنے کے لیے ان کے نام کی نذر و نیاز کی جاتی ہے جو مالی عبادت میں شرک ہے۔

قبر والوں کے وسیلے سے دعا کی جاتی ہے جو واسطے وسیلے کا شرک ہےدعا و پکار کا شرک ہے تعویز گنڈے کا شرک ہے اللہ کو چھوڑ کر تعویز پر توکل کرنا اسے لٹکانا کہ اس کی وجہ سے تکلیفوں اور بلاؤں سے محفوظ رہیں گے فرقہ پرستی کا شرک اللہ تعالی کے فرمان کے مقابلے میں فرقوں کے علماۓ کرام کے حکم ماننا فرقوں میں شامل ہونا یہ بھی شرک ہے اور اللہ کے مقابلے میں ان اکابرین کو رب بنالینا ہے🌸

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: