چادر کا تحفہ

ایک مرتبہ کسی خاتون نے بارگاہِ نبوی میں ایک چادر تحفہ پیش کی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اس چادر کو زیبِ تن فرمایا اور آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنے صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین کی محفل میں تشریف لائے تو وہاں موجود ایک صحابی رضی اللہ عنہ نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وسلم کی بارگاہ میں عرض کی یاسیدی یارسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وسلم یہ خوبصورت چادر مجھے عنایت فرما دیجئے ۔

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے وہ چادر اس صحابی رضی اللہ عنہ کو عطا فرما دی صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین کو ان صحابی رضی اللہ عنہ کا یہ عمل پسند نہ آیا اور ان سے کہا کہ جب آپ کے علم میں تھا کہ رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کسی سائل کو خالی ہاتھ نہیں لوٹاتے تو آپ نے یہ چادر کیوں مانگ لی؟ وہ صحابی رضی اللہ عنہ جو ایک عاشقِ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ واصحابہ وسلم صحابی تھے انہوں نے جواب میں یہ فرمایا رجوتُ برکتها حين لبسها النبي صلي الله عليه وآله وسلم لعلي أکفن فيها جب رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اس چادر کو پہن لیا تو میں نے اس کی برکت کی آرزو کی کہ یہ مجھے مل جائے تاکہ بعد مرگ میں اسی چادر میں کفنایا جاؤں حضرت سہل بن سعد رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں کہ ان صحابی رضی اللہ عنہ کو بعد مرگ اسی چادر میں دفنایا گیا بخاري الصحيح 5/ 2245 کتاب الأدب رقم 25689 بخاري الصحيح 1/ 429 کتاب الجنائز رقم 31218 نسائي السنن الکبري 5/ 480 رقم 49659 ابن ماجه السنن 2/ 1177 کتاب اللباس رقم 53555

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: