جب فاقے کا وقت آئے

ایک عیالدار عابد شخص بنی اسرائیل میں سے تھا اس پر فاقے کا وقت آیا نہایت بےقراری کی حالت میں اپنی بیوی کو کہا کہ جائے اور بچوں کے واسطے کچھ کھانے کے لئے لاۓ ایک تاجر کے دروازے پر اس کی بیوی آئ اور اس سے کچھ طلب کیا تا کہ اپنے بچوں کو کچھ کھلاسکے تاجر مان گیا اور کہا کہ میں تم کو کچھ دے دوں گا اگر تو خود کو میرے حوالے کر دے وہ عورت حاموش ھوگئ اور گھر لوٹ آئ تو دیکھا کہ بچےبوجہ بھوک چلاتے ہیں اور اسے کہتے ہیں امی ہم بھوک سے مر رہے ہیں ۔

وہ عورت پھر اسی تاجر کے پاس گئی اور بچوں کے متعلق اس سے عرض کیا اس نے پوچھاکہ کیا تجھے میری شرط قبول ہے عورت نے ہاں کہہ دی وہ خلوت میں گۓ عورت کا بدن شدت سے کانپنے لگا جیسا کہ ابھی اس کے تمام جوڑ ہی اکھڑ جائیں گے مرد نے پوچھا کہ تجھے کیا ہو گیا ہے عورت نے جواب دیا کہ اللہ تعالی سے خوف زدہ ہوں اس شخص نے کہا کہ باوجود اس قدر افلاس اور فاقےکے تو اس سے ڈرتی ہے مجھے تو اس سے بڑھ کر اللہ تعالی سے ڈرہونا چاہیے پس وہ برائی سے باز رہا اور عورت کی حاجت بھی پوری کر دی بس وہ عورت بہت سے مال کے ساتھ بچوں کے پاس آ گئی اور اس کے بچے خوش ہوگئے حضرت موسی علیہ السلام کو اللہ تعالی نے وحی فرمائی کہ فلاں دن فلاں کے پاس جاکر اسے آگاہ فرمائیں کہ میں نے اس کے سب معاصی بخش دیے ہیں ۔

موسی علیہ السلام اس کے پاس تشریف لے گئے فرمایا کہ تو نے شاید کوئی نیک عمل کیا ہے جو صرف اللہ تعالی اور تیرے درمیان ہی معاملہ ہے اس آدمی نے وہ تمام واقعہ بیان کر دیا تو موسی علیہ السلام نے فرمایا کہ اللہ تعالی نے تیرے سب گناہ معاف فرما دیے ہیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: