نفس

حضرت ابوالحسن رازی رحمۃ اللہ علیہ کو دو سال بعد دوران خواب اپنے والد کی زیارت ہوئی وہ تار کول کے لباس میں ملبوس تھے ابو الحسن نے کہا اے والد صاحب کیا وجہ ہے کہ آپ دوزخیوں کے حال میں ہے تو جواب دیا ہے بیٹے مجھے میرے نفس نے جہنم کی جانب ہانک دیا اے بیٹے تو اپنے نفس کے فریب سے بچ کر رہنا۔ ( میں چار دشمنوں میں گرفتار ہوا اور ان کا طاری ہوجانا بدنصیبی اور بد بختی کے باعث ہے ابلیس، دنیا، میرا نفس اور خواہش۔ یہ تمام ہی میرے اعداۂ ہیں اب ان سے کیونکر چھٹکارا ہو سکے گا۔

اور خواہش مجھے اپنی طرف بلاتی رہتی ہے کہ میرے خیالات بھی اسی کی دعوت دیتے ہیں شہوتوں اور خیالات کی ظلمت میں) حضرت حاتم اصم رحمۃ اللہ علیہ نے فرمایا ہے میرا نفس میری سرحد ہے میرے لیے میرا علم ہتھیار ہے میرا گناہ میرے لئے بدبختی اور شیطان میراعدو ہے جب کہ میرا نفس عذر پیش کرنے والا اور فریب کار ہے۔ ایک عارف نے کہا ہے کہ جہاد تین قسم کا ہے۔ پہلی قسم اہل باطل کے خلاف اپنے علم و دلیل سے جہاد۔ اللہ تعالی نے فرمایا ہے:۔ ( اور ان سے بہترین طریقے سے مجادلہ کریں)۔ نیز اللہ تعالی نے فرمایا ہے:۔ ( اور جو لوگ جہاد کرتے ہیں ہمارے بارے میں ہم اپنی راہ انہیں دکھادیں گے )۔ اور جناب رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ہے:۔ ( سب سے بڑا جہاد نفس کے خلاف جہاد ہے )۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: