پانچ چیزیں

حضرت عبداللہ اور حضرت احمد بن حرب رحمۃ اللہ علیہما دونوں اکٹھے ایک مقام پر چلے گئے وہاں زمین پر تھوڑی سی گھاس احمد بن حرب نے اکھاڑی تو حضرت عبداللہ نے ان کو فرمایا تم کو پانچ چیزیں ملیں۔ 1۔ اول یہ کہ اللہ سے تمہارا دل ہٹ کر گھاس کے ساتھ مشغول ہوگیا۔ 2۔ تو نے اللہ تعالی کے ذکر کے علاوہ دیگر فعل کی عادت نفس کو ڈالی۔ 3۔ تو نے ایسی راہ ڈال دی ہے جس کی دوسرے پیروی کریں گے۔ 4۔ اس اکھاڑی گئ گھاس کو رب کی تسبیح سے تو نے روک دیا ہے۔ 5۔ تم نے خود پر روز قیامت اللہ تعالی کی محبت قائم کی۔

اور حضرت سری سقطی رحمۃ اللہ علیہ سے روایت ہے کہ آپ نے فرمایا میں نے حضرت جرجانی رحمتہ اللہ علیہ کے پاس ستو دیکھے ان کے ساتھ وہ اپنی بھوک رفع کرتے تھے میں نے پوچھا کہ آپ کھانا اور دیگر اشیاء کیوں تناول نہیں کرتے تو فرمایا کہ میں نے دیکھا ہے کہ کھانا چبانے اور ستوکھا کر وقت گزارنے میں 90 مرتبہ تسبیح کہنے کا فرق ہے لہذا گزشتہ چالیس سال کی مدت سے میں نے روٹی کبھی نہیں چلبائی۔ اور حضرت ابو الحماد رحمۃ اللہ علیہ نے تیس برس کا عرصہ مسجد حرام میں گزارا مگر اس دوران کبھی ان کو کھانا کھاتے نہیں دیکھا گیا تھا اور بغیر ذکر اللہ کے انھوں نے کبھی کوئی گھڑی نہ گزاری تھی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: