ملائکہ حاملین عرش

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ نے روایت کیا ہے کہ اللہ تعالی نے ملائکہ حاملین عرش پیدا فرمائے تو ان کو حکم فرمایا کہ میرے عرش کو اٹھاؤ لیکن وہ فرشتے عرش نہ اٹھا سکے۔ پھر اللہ تعالی نے ان کو فرمایا کہ لا ہولا ولا قوۃ الا باللہ( نہیں ہے توفیق اور نہ ہی قوت بغیر اللہ تعالی کے)۔ اب انھوں نے یہ پڑھا تو عرش کو اٹھا لیا اور ان کے پاؤں زمین ہفتم پر ہوا کے روش پر ٹک گئے۔

ان کے پاؤں جم گئے تو عرش تھم گیا اس وقت سے اب تک وہ ملائکہ یہ لاحولاولاقوۃ متواتر پڑھ رہے ہیں تاکہ وہ الٹ کر گر نہ جائے اور معلوم بھی نہ پڑے کہ وہ کہاں جا پڑے ہیں یہ عرش اٹھانے والوں کا معاملہ ہے اور وہی ذات عرش کو اٹھانے کی توفیق ان کو عطا کئے ہوئے ہے۔ مروی ہے کہ جو شخص ہر صبح کو اور ہر شام کے وقت سات سات مرتبہ یہ پڑھے:۔ حسبی اللہ لا الہ الا ھو علیہ توکلت وھو رب العرش العظیم۔ ( میرے واسطے اللہ تعالی ہی کافی ہے کوئی معبود نہیں ہے سوائے اس کے میں نے اس پر ہی بھروسہ رکھا اور وہی عرش عظیم کا پروردگار ہے)۔

اس کے واسطے اس کے جملے افکار و ہموم اللہ تعالی اس کا مددگار کافی ہوگا۔خواہ وہ ان میں درست ہو یا غلط ہو ایک روایت ہے کہ اللہ تعالی ہر دنیاوی اور آخروی فکر کے لئے کافی ہو گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: