بے نمازی کا چہرہ

مروی ہے کہ روز قیامت  بے نمازی کا چہرہ سیاہ پڑ جائے گا اور دوزخ میں ایک وادی لملم کہلاتی ہے اس کے اندر سانپ ہیں کہ ہر ایک سانپ اونٹ کی گردن جتنا موٹا ہے اور وہ ایک مہینے کی مسافت کے برابر لمبا ہوتا ہے وہ نماز چھوڑنے والے کو کاٹے گا۔

اس کا زہر اس بے نماز بندے کے جسم کے اندر ستر سال تک جوش کرتا رہے گا پھر اس کا گوشت زرد ہو جائے گا۔ روایت ہے کہ حضرت موسی علیہ السلام کی خدمت میں بنی اسرائیل کی ایک عورت حاضر ہوئی اور عرض کیا یا نبی اللہ میں بڑے سخت گناہ کی مرتکب ہو گئی ہوں۔ اور میں نے اللہ سے توبہ بھی کی ہے۔ آپ اللہ سے دعا فرمائیں کہ اللہ میرے گناہ کی معافی عطا فرماۓ اور میری توبہ کو قبول فرمائے۔ موسی علیہ السلام نے کہا تیرا گناہ کیا ہے اس نے جواب دیا کہ زنا کیا اور بچے کو جنم دیا اس کے بعد اس کو قتل کر دیا۔ موسی علیہ السلام نے فرمایا اے بدکار یہاں سے نکل جا ایسا نہ ہو کہ آسمان سے آگ کی بارشہونے لگے جو تیری بدبختی کے باعث ہم کو بھی نہ جلا دے۔ اس کا دل ٹوٹ گیا وہ چلی گئی۔ حضرت جبرائیل علیہ السلام نازل ہوئے اور کہا اے موسیٰ علیہ السلام اللہ نے فرمایا ہے کہ تو نے توبہ کرنے والی کو کیوں نکال دیا ہے اے موسیٰ کیا میں اس سے بھی بدتر تجھے نہ بتا دوں۔ موسی علیہ السلام نے کہا اے جبرئیل اس سے بڑھ کر برا کون ہے جبریل نے کہا جو نماز کو ترک کرے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: