جنت میں جانے کا عمل

 بسند لاباس بہ طبرانی میں متابعات میں روایت ہوا ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی خدمت میں ایک شخص حاضر ہوا اور اس نے عرض کیا۔ یارسول اللہ مجھے ایسا عمل بتا دیں کہ میں وہ عمل کرو تو جنت میں چلا جاؤں۔

آنحضرت نے اس کو فرمایا اللہ کے ساتھ شرک مت کر خواہ تجھے سزا ہی دی جائے اور جلایا جائے اپنے ماں باپ کی فرمانبرداری کر چاہے تجھ کو تیرے مال اور تیری ہر شے سے الگ کیا جائے اور جان بوجھ کر نماز مت چھور کیونکہ جس نے عملا نماز ترک کردی وہ اللہ کی ذمہ داری سے خارج ہوگیا۔ اور بسند صحیح ایک روایت میں وارد ہے۔ البتہ اس میں انقطاع بھی موجود ہے کہ اللہ سے شریک مت کر خواہ قتل کیا جائے اور جلا دیا جائے اور اپنے ماں باپ کی نافرمانی کا مرتکب نہ ہو خواہ تجھے وہ فرمائے اپنے مال اور اہل کو چھوڑ دے۔ جان بوجھ کر نماز مت چھوڑو کیونکہ جس نے جان بوجھ کر نماز چھوڑ دی وہ اللہ کے ذمے سے خارج ہوگیا اور شراب مت پی کیوں کہ یہ برائیوں کی جڑ ہے اللہ کی نافرمانی سے بچے رہو کیونکہ نافرمانی کے باعث اللہ کا غضب ہوتا ہے اور جنگ کے میدان میں مت بھاگنا خواہ لوگ مارے کی جائیں اور اگر لوگوں پر موت وارد ہو جائے تو ثابت قدم رہو اور اپنی وسعت کے مطابق اپنے اہل خانہ پر خرچ کرو اور ان سے ادب کے واسطے ڈنڈے کو دور مت کرنا اور ان کو اللہ کے بارے میں خوف دلاتے رہنا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: