مومنوں کے لیے اللہ کا انعام

امام ترمذی رحمہ اللہ علیہ نے ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے حدیث نقل کی ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا مومنوں میں سے ایک کو طلب کیا جائے گا اور اس کو داہنے ہاتھ میں کتاب دی جائے گی اور اس کے بدن کو ساٹھ گز کیا جائے گا چہرہ سفید ہو گا سر پر موتی کا تاج پہنا ہو گا وہ چمک رہا ہو گا وہ اپنے رفقاء کی جانب جاتا ہوگا اور دور سے ہی دیکھتے ہوئے وہ کہیں گے اے اللہ اس کو ہمارے پاس لا اور ہمارے واسطے اس میں برکت ڈال دے اور ان کے پاس آئے گا اور کہے گا کہ تم خوش ہو جاؤ تم میں سے ہر شخص کے واسطے اتنا انعام اور کرم ہے۔

اور کافر کا چہرہ کالا ہوگا اس کے بدن کو بھی 60 گز تک کر دیں گے وہ انسانی شکل میں ہو گا سر پر سیاہ تاج بھی ہو گا جب اس کے ساتھ والے اسے دیکھیں گے تو کہنے لگیں کہ ہم اس برائی سے اللہ تعالی کی پناہ چاہتے ہیں یا الہی یہ ہمارے پاس نہ آئے راوی کا بیان ہے کہ ان کے پاس وہ آ جائے گا اور وہ کہنے لگیں گے کہ اے اللہ اس کو ذلیل فرما اور وہ ان کو کہے گا اللہ تعالی نے تم کو رحمت سے دور کر دیا ہے تم میں سے ہر شخص کے واسطے اتنی سزا ہے۔

اللہ تعالی فرماتا ہے
جب زمین میں سخت زلزلہ آ جائے گا اور زمین اپنے بوجھ باہر نکال پھینکے گی۔
حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ نے یوں وضاحت کی فرمایا کہ نیچے سے حرکت پذیر ہوگی اور جتنے پیٹ کے اندر مردہ لوگ اور دفن ہیں سب کو باہر نکال لائے گی حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ نے روایت کیا ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اس آیت کو پڑھا:( جس روز خود ہی یہ اپنی خبروں کو بیان کرے گی)۔

پھر فرمایا کیا تم کو معلوم ہے کہ اس کی کیا اخبار ہیں صحابہ نے عرض کیا اللہ اور اس کا رسول ہی بہتر جانتے ہیں آنحضرت نے فرمایا خبر یہ ہے کہ زمین کے اوپر جو کچھ ہر مرد اور ہر عورت نے کیا ہوگا زمین اس کے عمل کی گواہی دے گی رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے روایت کیا گیا ہے کہ ارشاد فرمایا زمین سے بچ کر رہو یہ ماں ہے تم لوگوں کی جو بھی اچھا برا عمل اس پر کرو گے یہ وہ بتا دے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: