دبارہ زندہ کرنے کا دن

ایک روایت ہے کہ اللہ تعالی اس وقت حضرات جبرائیل میکائیل اور اسرافیل علیہ اسلام کو دوسری بار زندہ فرمائے گا تو وہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی قبر کی جانب اتر آئیں گے ان کے ساتھ براق اور جنتی لباس بھی ہوگا انجناب کی قبر مبارک کھل جائے گی تو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے جبریل علیہ السلام کی جانب نگاہ ڈالیں گے اور فرمائیں گے۔

حضرت جبرائیل یہ کونسا روز ہے وہ جواب دیں گے کہ روز قیامت ہے یہ روز ہے حق ہونے والی کا یہ روز ہے کھڑکھڑا نے والی کا آپ ارشاد فرمائیں گے اے جبرائیل میری امت سے اللہ نے کیسا سلوک فرمایا ہے۔ جبرائیل علیہ السلام عرض کریں گے حضور آپ خوش ہو جائیں کہ سب سے پیشتر آپ کی قبر کی زمین ہی پھٹی ہے۔

حضرت ابو ہریرہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے کہ اللہ کہتا ہے اے گروہ جنات کے اے گروہ انسانوں کے میں نے تم کو نصیحت فرمائی اور اب یہ تمہارے اعمال تمہارے اعمال ناموں میں ہیں۔ جسے بھلائی میسر ہوں وہ حمد بیان کرے اللہ کی اور جس سے اس کے علاوہ کچھ ملے وہ بجز آپ نے کسی اور کو ملامت مت کرے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: