جنت کے بارے میں کہ جنت کیسی ہوگی

مروی ہے حضرت جابر سے کہ ہم کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ کیا تم کو میں مکانات جنت کے متعلق نہ بتاؤں۔عرض کیا گیا ہاں یا رسول اللہ آپ پر میرے ماں اور باپ نثار۔ آپ نے ارشاد فرمایا کہ جنت کے اندر جواہرات کی قسم کے بنے ہوئے مکان ہیں اندر سے باہر واضح دکھائی دیتا ہے اور باہر سے اندرون واضح نظر آتا ہے ان میں ایسے ایسے انعامات اور لذات اور مسرتیں ہیں جو کسی آنکھ نے کبھی نہیں دیکھی نہ ہی کسی کان نے سنی نہ ہی کبھی کسی انسانی دل میں خیال ہی گزرا۔

میں نے عرض کیا یا رسول اللہ یہ مکانات کس کے واسطے ہیں آپ نے فرمایا جو سلام کو عام کرتا ہو کھانا کھلاتا ہو روزہ رکھتا ہو رات کو نماز پڑھتا ہو جب کہ لوگ سو رہے ہوں۔ ہم نے گزارش کی یارسول اللہ ایسی ہمت کے حاصل ہے۔ تو آپ نے فرمایا میری امت میں یہ ہمت موجود ہے میں تمہیں اس کی تفصیل بتاتا ہوں سلام کو عام کیا جس نے کسی مسلمان کو سلام کیا تو اس نے جو اپنے اہل و عیال کو اتنا کھلاۓ کہ وہ خب سیر ہوں تو اس نے کھانا کھلا دیا جو ماہ رمضان کے روزے رکھے اور جو عشاء اور فجر کی نماز کی ہویاجماعت کے ساتھ پڑھے اس نے رات کو نماز پڑھی جبکہ اور لوگ سو رہے تھے۔

اور لوگوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے اللہ کے اس ارشاد کے بارے میں سوال عرض کیا۔( اور ہمیشہ کے باغوں میں پاک گھر)۔ تو آنحضرت نے فرمایا کہ اس سے مراد ہیں موتی کے بنے ہوئے محلات ہر ایک محل کے اندر سرخ یاقوت کے ستر گھر موجود ہیں۔ اور ہر ایک گھر میں سبز زمرد کے ستر کمرہ جات موجود ہیں اور ہر کمرے کے اندر ایک پلنگ پڑا ہوا ہے۔ ہر پلنگ کے اوپر ہر رنگ کے ستر بچھونے موجود ہیں۔ اور ہر بچھونے کے اوپر جنتی خوبصورت ایک حور موجود ہے اور ہر کمرے کے اندر ستر دسترخوان ہوں گے ہر دسترخوان پرستر طرح کے کھانے ہوں گے۔ ہر کمرے کے اندر ستر خدام ہوں گے اور ہر ایماندار کو ہر صبح کو اتنی قوت عطا کی جایا کرے گی کہ وہ یہ تمام انجام دے سکے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: