اے جماعت فقیروں کی

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے۔
اے جماعت فقیروں کی! تم اپنے دلوں سے اللہ کے ساتھ راضی ہو جاؤ تو اس طرح تمہیں فقر کا ثواب ملے گا ورنہ نہیں۔

اور جناب موسی علیہ السلام کے بارے میں ہے کہ قوم بنی اسرائیل انہیں کہنے لگی ہمارے واسطے اپنے رب سے ایسا عمل پوچھیں کہ ہم نے جب ایسے کر لیا تو کیا وہ ہم سے راضی ہو جائے گا۔ موسی علیہ السلام نے عرض کیا یا الہی تو نے سماعت کر لیا ہے جو کچھ وہ کہتے ہیں اللہ نے فرمایا۔
اے موسی! ان کو فرما دیں کہ وہ میرے کم و بیش دیے ہوئے کہ ساتھ راضی رہیں تو میں بھی ان کے ساتھ راضی ہو۔

قرآن کریم میں 90 سے بھی زیادہ مقامات ہیں جہاں پر صبر کا ذکر فرمایا گیا ہے اور صبر کرنے کا انجام اعلی درجات اور نیکیوں پر ایمان کا واضح ارشاد ہوا ہے اور صبر اختیار کرنے والے لوگوں کے حق میں اس طرح کے انعامات فرمانے کا وعدہ فرمایا ہے جیسے کسی اور کے حق میں وعدہ نہیں فرمایا۔ اللہ نے فرمایا ہے۔
( ان لوگوں پر درود ہے اور خاص رحمت ہے ان کے پروردگار کی جانب سے)۔
اس طرح صبر کرنے والوں کے حق میں ہدایت اور رحمت اور صلوۃ مذکور ہیں سب آیتوں کو نقل کرنا تو مشکل ہے البتہ کچھ احادیث اس بارے میں یہاں نقل کی جاتی ہیں۔

جناب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا ہے صبر کرنا نصف ایمان ہے۔

رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا ارشاد ہے تم کو جو سب سے زیادہ قلیل چیز عطا ہوئی وہ یقین اور صبر ہے اور ان دونوں چیزوں سے جو کچھ حصہ جسے عطا ہوا تو وہ یہ پرواہ نہ کرے کہ رات کا کتنا قیام اور دن کے نفلی روزے کتنے فوت ہوگئے ہیں اور تم اپنے موجودہ حال پر صابر رہو یہ بات میرے نزدیک اس سے بڑھ کر محبوب ہے کہ تم میں سے ہر شخص کی ملاقات میرے ساتھ ایسے حال میں ہو کہ ہر ایک اپنے ساتھ اتنا عمل لیے ہوئے ہو جتنا تمام مل کر عمل کرتے ہیں۔ البتہ یہ خدشہ ہے مجھے کہ میرے بعد تمہارے لئے دنیا فراخ ہو جائے گی پھر تم ایک دوسرے سے اجنبی ہو جاؤ گے تو پھر اہل آسمان بھی تمہارے ساتھ اجنبیت اختیار کریں گے۔ اب جو صبر اختیار کرتا ہے اور اس کو ثواب کی امید ہوتی ہے تو اس نے پورا ثواب پا لیا پھر آنجناب نے یہ آیہ کریمہ پڑھی۔
( تمہارے پاس جو کچھ موجود ہے اس نے ختم ہو جانا ہے اور جو کچھ اللہ کے پاس ہے وہ ختم نہ ہوگا اور جن لوگوں نے صبر اختیار کیا ان کو ہم لازما اجر دیں گے)۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: