نماز ادا کرنے سے 27 گنا افضل

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا ہے جماعت کے ساتھ ادا کی گئی نماز کا مرتبہ اکیلے نماز ادا کرنے سے 27 گنا افضل ہے حضرت ابوہریرہ سے مروی ہے کہ کچھ لوگوں کو رسول اللہ نے نماز میں غیر موجود پایا تو آپ نے فرمایا کہ میں نے یہ ارادہ کیا کہ ایک شخص کو نماز پڑھانے کا حکم فرما دو اور میں خود ان لوگوں کے پاس جا کر ان کے گھروں کو آگ لگا دوں جو پیچھے رہ جاتے ہیں نماز باجماعت سے۔

دیگر ایک روایت میں اس طرح ہے پھر میں ان لوگوں کے پاس جاؤ جو نمازسے پیچھے رہ جانے والے ہیں ان کے گھروں کو لکڑیوں کے گھٹے سے جلا دو جبکہ اس کو اگر علم ہو کہ اس کو موٹی ہڈی یا دو گھر ملیں گے تو پھر بھی وہ آئے گا۔ اور ایک مرفوع روایت حضرت عثمان سے ہے کہ جس نے نماز عشاء جماعت کے ساتھ پڑھیں تو اس نے گویا آدھی شب تک قیام کیا اور جس نے صبح کی نماز جماعت کے ساتھ ادا کی تو جیسے اس نے تمام رات قیام کیا۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے جس نے جماعت کے ساتھ نماز پڑھی اس عبادت کے ساتھ سمندر ہی پر کردیا۔ حضرت سعید بن مسیب نے فرمایا ہے کہ بیس برس گزر چکے ہیں کہ جب بھی موذن نے نماز کے لیے اذان دی میں مسجد میں پہلے ہی موجود ہوتا تھا۔ حضرت واسع نے فرمایا ہے تو دنیا سے میری پسند صرف تین چیزیں ہیں۔

1۔ ایسا بھائی ہو کہ میں جب غلط روش اختیار کرو تو وہ مجھے درست کر دے۔

2۔ صرف اتنی سی غذا میسر ہو کہ جس کے بارے میں مجھ سے حساب سوال نہ ہو۔

3۔ جماعت کے ساتھ نماز پڑھنا جس میں غفلت نہ ہونے پائے اور میرے حق میں اس کا اجر ثواب درج کر دیا جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: