ماما بابا کو اسرائیلیوں نے شہید کردیا ، ننھے بھائی کو لیے اکیلا ہی انجانی منزل کو چل دیاماما بابا کو اسرائیلیوں نے شہید کردیا ، ننھے بھائی کو لیے اکیلا ہی انجانی منزل کو چل دیا الیاس حامد

جب فلسطینی بچہ سب کچھ کھو جانے کے بعد ننھے بھائی کو لیے اکیلا ہی انجانی منزل کو چل دیا ۔ ماما بابا کو اسرائیلیوں نے شہید کردیا ، ننھے بھائی کو لیے اکیلا ہی انجانی منزل کو چل دیاماما بابا کو اسرائیلیوں نے شہید کردیا ، ننھے بھائی کو لیے اکیلا ہی انجانی منزل کو چل دیا  ۔ غزہ میں اسرائیل نے انسانیت کو شرما دینے والا جو کھیل کھیلا ہے اور مسلسل کھیل رہا ہے ، اس شیطانیت سے جو اثرات سامنے آر ہے ہیں یہ انتہائی بھیانک ہیں ان حالات میں دل کو چیر دینےوالی اور اندوہناک داستانیں سامنے آ رہی ہیں .

اس طرح کی داستانوں میں ایک تصویری داستان آپ کے سامنے ہے جس میں ایک فلسطینی بچہ بے سرو سامانی کے عالم میں ایک لکڑی کی ریڑھی پر اپنے ننھے سے بھائی کو لٹا کر لے جا رہا ہے ، اس کے ساتھ ہی اس کی کل جمع پونجی ہے جو اب بچی ہے . ننھے بچے کی یہ ایک کہانی نہیں ہے نہ جانے سینکڑوں ہزاروں فلسطینی بچے اسی طرح‌اسرائیل کی بربریت اور ظلم کے مارے کسی خاص پناہ گاہ اور محفوظ ٹھانے کی تلاش میں مارے مارے پھر رہے ہیں. یہ تصویر اقوام عالم ، مہذب دنیا اور سو کالڈ انسانی حقوق کے علمبرداروں کے لیے کافی ہے کہ یا تو یہ انسانی حقوق کا ڈرامہ رچانا بند کردیں‌ یا اس بچے کے لیے اپنا کردار ادا کریں اور اس کو اس حالت تک پہنچانے والے کو انجام تک پہنچا دیں ، لیکن تجربات نے ثابت کیا ہے کہ یہ بچہ چونکہ مسلم سوسائٹی سے تعلق رکھتا ہے اور اس کا تعلق فلسطین سے ہے ، کاش کہ ایسے مناظر مغربی ، عسیائی یا یہودی سوسائٹی سے پیش آتے تو دیکھناکیسے حقوق انسانی ، حقوق اطفال اور ہر طرح کے حقوق جاگ اٹھتے لیکن معذرت کے ساتھ یہ تو مسلم بچہ ہے اور اس کو کیونکر جینےکا حق بھی حاصل ہو…؟

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: