شکریہ اسرائیل۔۔زبیر منصوری

امت پھر سے سونے اور اونگھنے لگتی ہے اور تم جھنجھوڑ کر جگا دیتے ہو بجھتی راکھ کی چنگاریاں بھڑکا دیتے ہو
امت پھر بیدار ہو جاتی ہے تم اپنی مکارانہ چال چلتے ہو اللہ اپنی ماہرانہ چال چلتا ہے
کروڑوں مسلمان پھر بیدار ہو کر غصے نفرت انتقام سے اسرائیل کو دیکھنے لگتے ہیں مغرب میں جہاں اس نے اربوں ڈالر سے اپنی امیج بلڈنگ کی ہوتی ہے پھر ناپسندیدگی بڑھنے لگتی ہے کیسے فلسطین میں اعلان بالفور سے اس ناسورکو بسایا گیا تھا کیسے بڑھایا اور کیسے پھیلایا گیا ؟

۔امت کا زہین طبقہ پھر سوال کرتا ہے کون سے اسرائیل کو تسلیم کریں؟ 1948 والے 1967والے یا پھر آج والے ان تینوں کے جغرافیہ میں تو بہت زیادہ فرق آ چکا ؟ کس اسرائیل کو؟ جس نےاپنی سرحدیں طے کر کے اقوام متحدہ میں جمع کروانے سے انکار کیا ہے؟
امت کا نوجوان پھر سے نفرت کرنے لگتا ہے امریکی باجگزار حاکموں کو پھر بیک فٹ پر جانا پڑتا ہے لاکھوں نوجوان اسرائیل کو نقصان پہنچانے کے درپےہو جاتے ہیں مختلف فیلڈز میں اسرائیلی موقف دفاعی پوزیشن پر آ جاتا ہے غیرت مند فلسطینی پھر مزاحمت کار بن کر اٹھ کھڑے ہوتے ہیں موت سے ڈرتے ان یہودی چوہوں کو پھر سے خوف کے بل میں گھسیڑ دیا جاتا ہے اور شمع یقین کے پروازوں کے لئے تو موت یوں بھی شہادت کا تاج ساتھ لاتی ہے۔امت کی عملا ویکسینیشن ہو جاتی ہے بڑھتی ہمدردیاں یا کم ہوتی نفرتیں پھر اپنی جگہ آ جاتی ہیں ۔۔ اسرائیلیوں انتظار کرو اپنے مسیح دجال کا
اور ہم بھی منتظر ہیں اپنے مسیح کے اور دور تودونوں ہی کا شروع ہو چکا ہمارا ایمان ہے آخری معرکہ میں نہ تمہاری عیاری نہ دولت نہ سازش نہ سائنسی و میڈیائی ترقی کچھ بھی تمہارے کام نہیں آئے گا اور کائنات کے سارے شجر و حجر تمہارے خلاف ہمارے اتحادی بن جائیں گے۔۔۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: