صدقے کا حصہ متعین کر لینا چاہئے

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے جس وقت ایک شخص ارادہ کر لیں کہ صدقہ کرے تو اس کو اپنے والدین کے لیے بھی حصہ متعین کر لینا چاہئے جب کہ وہ مسلمان ہو تو اس کے ماں باپ کے لیے اس کا اجر ہوگا اور اس کے لئے یعنی بیٹے کے واسطے ان کے دو اجر ہوں گے اور ان کے اجر میں بھی کوئی کمی نہ ہوگی یعنی والدین کے اجر میں۔ حضرت مالک بن ربیعہ نے فرمایا ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی خدمت اقدس میں ہم لوگ بیٹھے ہوئے تھے اس دوران ایک شخص آیا جو بنو سلمہ سے تھا اور عرض کیا یا رسول اللہ کیا میرے ماں باپ کے لیے کوئی نیکی ہے جو ان کے فوت ہو جانے کے بعد میں کر سکوں۔

آنحضرت نے ارشاد فرمایا ان کے واسطے مغفرت کی دعا کر ان کے کئے گئے وعدوں کو پورا کر ان کے دوستوں کی عزت اور احترام کر اور صلہ رحمی کر کیوں کہ صلہ رحمی ان کے ہی سبب سے کی جاتی ہے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ہے عظیم ترین نیکی یہ ہے کہ ایک شخص اپنے ماں باپ کے ساتھ بہتر برتاؤ کرنے کے بعد اپنے ماں باپ کے دوستوں سے تعلق قائم رکھے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا ارشاد ہے بیٹے کا ماں سے نیکی کرنا دوگنا اجر دیتا ہے۔رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے ماں کی دعا جلدی قبولیت حاصل کرتی ہے لوگوں نے عرض کیا یا رسول اللہ کس وجہ سے تو آپ نے فرمایا کیونکہ وہ باپ سے بڑھ کر رحم کرنے والی ہے اور ہمیں تعلق والوں کی دعا ساقط نہیں ہوتی مراد یہ ہے کہ والدہ کی دعا جلد قبول ہوتی ہے۔

ایک شخص نے آنحضرت کی خدمت میں عرض کیا یارسول اللہ میں نیکی کس سے کروں آپ نے فرمایا اپنے والدین سے نیکی کرو اس نے عرض کیا میرے والدین اب نہیں ہیں آپ نے ارشاد فرمایا تم اپنے بچے سے نیکی کرو جس طرح تیرے اوپر والدین کا حق ہے۔ اور ایسے ہی تیرے بچے کا حق بھی تیرے اوپر ہے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے رحم فرمائے اللہ اس باپ پر جونیکی کرنے میں اپنے بچے کی معاونت کرے یعنی اس کو برے سلوک کی وجہ سے نافرمانی پر مت ابھارے۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے کہ اپنی اولاد میں عطا کرنے کے لحاظ سے مساوات رکھا کرو۔ لوگوں میں میں یہ بات عام کہی جاتی ہے کہ تیرا بچہ تیری خوشبو ہے اگر تو اس کو سات مرتبہ سونگھ لے گا تو وہ بھی تیری خدمت سات بار بجا لائے گا اور پالنے پوسنے اور تربیت کر دینے کے بعد وہ تیرا دشمن ہوگا یا تیرا شریک ہوگا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: