افضل ترین 10 ایام

حضرت ابن عباس راوی ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ہے کہ ان دس ایام میں کی گئی عبادت سے زیادہ پسندیدہ دیگر کوئی عمل اللہ کے نزدیک نہیں ہے عرض کیا گیا اور فی سبیل اللہ جہاد بھی نہیں فرمایا فی سبیل اللہ جہاد بھی نہیں بجز اس صورت کہ ایک شخص اپنی جان اور مال لئے ہوئے گھر سے نکل پڑے اور واپس کوئی چیز نہ لائے۔

حضرت جابر راوی ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد پاک ہے کہ اللہ کے نزدیک دیگر یوم محبوب تر اور زیادہ افضل ان 10 ایام سے نہیں صحابہ نے عرض کیا کہ فی سبیل اللہ جہاد بھی نہیں فرمایا نہ ہی فی سبیل اللہ جہاد اس کی مانند ہے مگر یہ کہ آدمی کا گھوڑا مجروح ہو جائے اور اس کا چہرہ بھی خاک میں لتھڑ جائے۔جناب عائشہ راوی ہے کہ ایک نوجوان اس حال میں تھا کہ ذوالحجہ کا چاند نمودار ہو جاتا تو وہ روزے رکھنا شروع کر دیتا تھا اس کے متعلق رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو معلوم ہوا آپ نے اس کو طلب فرما کر پوچھا ان ایام میں تو کیوں روزے رکھتا ہے عرض کیا یارسول اللہ آپ پر میرے ماں باپ نثار یہ ایام مشاعر اور ایام حج ہے ممکن ہے اللہ مجھ کو بھی ان کی دعاؤں میں شامل فرما لے فرمایا تیرے واسطے ہر روزے کے عوض ایک صد غلام کو آزاد کر نے ایک صد اونٹوں کو خیرات کرنے ایک صد گھوڑے ایسے جن پر جہاد فی سبیل اللہ رکھا ہو کے برابر اجر ہے اور یوم الترویۃ آٹھ ذی الحجہ کو اس دن ایک ہزار غلام آزاد کر دینے ایک ہزار اونٹ کی قربانی اور ایک ہزار گھوڑے معہ سامان جہاد فی سبیل اللہ دینے کے برابر تمہارے حق میں ثواب ہے۔ اور یوم عرفہ نو ذوالحجہ کا روز جب آئے گا تو تمہارے واسطے دو ہزار غلام آزاد کرنے دو ہزار اونٹ کی قربانی اور دو ہزار گھوڑے جن پر فی سبیل للہ سواری کرتے ہیں کہ برابر ثواب ہوگا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: