قرب الہی

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے تمہارے لئے لازم ہے کہ رات کو قیام کرو کیونکہ تم سے پہلے والے نیک لوگوں کا یہ معمول رہا ہے۔ یہ اس لیے ہے کہ رات کو قیام کرنے کے سبب قرب الہی نصیب ہوتا ہے

معاصی کی معافی عطا ہوتی ہے بدن کی بیماریاں ختم ہوجاتی ہیں اور گناہوں سے رکاوٹ ہو جایا کرتی ہے ۔ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے جو آدمی بَوقت شب نفل نماز ادا کرتا ہوں پھر کسی روز اس پر نیند کا غلبہ ہو جائے تو اس کے حق میں نماز کا ثواب درج کر دیا جاتا ہے اور اس کی وہ نیند صدقہ ہو جاتی ہے ۔ اس پر حضرت ابوذر کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا اگر تم سفر پر روانہ ہونے کا ارادہ کرتے ہو تو کیا زاد راہ تم بنایا کرتے ہو انہوں نے عرض کیا ہاں تو آنحضرت نے فرمایا تو قیامت کے سفر کے واسطے ذادراہ کیا ہے اے ابوذر کیا تجھے میں یہ نا بتاؤ وہ چیز جو اس روز تمہارے لئے مفید ہو عرض کیا ہاں ۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم پر میرے ماں باپ نثار ہوں آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ قیامت کے روز کے لیے کسی بڑے سخت گرم دن میں روزہ رکھو ۔ قبر میں وحشت رفع کرنے کے واسطے دوران شب نماز پڑھو اور بڑے امور قیامت کے واسطے حج ادا کرو ۔

اور ہر مسکین پر صدقہ کروں یا کلمہ حق کہہ یا کسی برائ سے باز نہیں رہ۔روایت کیا گیا ہے کہ ایک شخص عہدرسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم اس وقت اٹھ کر نماز شروع کر دیتا تھا اور قرآن پڑھتا تھا جب دیگر لوگ اپنے بستروں میں چلے جایا کرتے تھے اور ان کی آنکھیں سو جایا کرتی تھی اور وہ شخص دعا کیا کرتا تھا اے پروردگار تعالیٰ مجھے آگ سے محفوظ رکھ اس کے متعلق رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم سے ذکر کیا گیا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جس وقت وہ اس طرح کر رہا ہوگا مجھے خبر کرنا بس آپ صلی اللہ علیہ وسلم اس کے پاس تشریف لے گئے اس کی دعاؤں کو آپ نے سنا صبح ہوئی تو آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا اے فلاں شخص تو نے اللہ سے جنت کی طلب نہیں کی عرض کیا یا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم میرا ایسا مقام نہیں ہے نہ ہی میرے اعمال کو وہاں تک رسائی ہے کچھ دیر بعد حضرت جبرائیل علیہ السلام نازل ہو گئے اور کہا کہ فلاں شخص کو فرما دیں کہ اس کو اللہ نے دوزخ سے اپنی پناہ عطا فرما دی ہے اور جنت میں داخل فرما دیا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: