سورة_الکھف اور فتنہ دجال سے حفاظت

ورۃ الکھف قرآن کی ایک عظیم سورت ہے، جمعہ کے دن اس کی تلاوت مستحب ہے ۔ جو آدمی روز جمعہ سورہ الکھف کی تلاوت کرے گا اللّٰه تعالیٰ اس کے لئے نور فراہم کرتا ہے ۔

نبی ﷺ کا فرمان ہے من قرأ سورةَ الكهفِ يومَ الجمعةِ أضاء له النُّورُ ما بينَه و بين البيتِ العتيقِ(صحيح الجامع: 6471) ترجمہ:- جس نے جمعہ کے دن سورۃ_الکھف پڑھی اس کے اور بیت اللّٰه کے درمیان نور کی روشنی ہو جاتی ہے۔ رسول صلی اللّٰه علیہ وسلم نے فرمایا
من قرأ سورةَ الكهفِ في يومِ الجمعةِ ، أضاء له من النورِ ما بين الجمُعتَينِ(صحيح الجامع:6470) ترجمہ:- جو جمعہ کے دن سور ة الکھف پڑھے،اس کیلئے دونوں جمعو ں(یعنی اگلے جمعے تک)کے درمیان ایک نور روشن کردیا جائے گا۔ «مَنْ قَرَأَ سُورَةَ الْكَهْفِ لَيْلَةَ الْجُمُعَةِ، أَضَاءَ لَهُ مِنَ النُّورِ فِيمَا بَيْنَهُ وَبَيْنَ الْبَيْتِ الْعَتِيقِ» [صحيح الترغيب للالبانی : 736]۔ ترجمہ : نبی صلی اللّٰه علیہ وسلم نے فرمایا :جس نے جمعہ کی رات سورۃ الکھف پڑھی اس کے اور بیت اللہ کے درمیان نور کی روشنی ہو جاتی ہے۔ رات و دن کی دونوں روایات کے ملاکر یہ کہاجائے گا کہ سورہ الکھف پڑھنے کا وقت جمعرات کے سورج غروب ہونے سے لیکر جمعہ کے سورج غروب ہونے تک ہے ۔

لہذا مسلمانوں کو اس عظیم سورت کی ہرجمعہ تلاوت کرنی چاہئے ۔ اس سورت کی عظمت کا ایک سبب یہ بھی ہے کہ یہ فتنے دجال سے نجات کا باعث ہے ۔ خروج دجال قیامت کی بڑی نشانیوں میں سے ایک ہے اور فتنہ دجال زمانے کے شروفتن میں سب سے بڑا فتنہ ہے ۔ مکہ مکرمہ اور مدینہ طیبہ کے علاوہ دجال پوری دنیا کو روند ڈالے گا اوربے شمار لوگوں کو اپنے فتنوں کا شکار بنالے گا ۔اس فتنےکا مقابلہ مومنوں کے لئے ایک چیلنج کی طرح ہوگا ۔ نبی ﷺ نے اس فتنے سے بچنے کے متعدد طرق واسباب بیان کئے ہیں ۔ منجملہ ان طریقوں میں سے ایک طریقہ سورۃ الکھف کی ابتدائی دس آیات کی قرات وحفظ بھی ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: