محبت اور پسند میں فرق

میں نکاح سے پہلے محبت کی قاٸل نہیں ہوں۔ جب کبھی محبت کی کوئی بات ہو تو بہت سے لوگ یہ کہتے ہیں کہ حضرت خدیجہؓ اور حضرت مُحَمَّد ﷺ کی محبت کی شادی تھی۔اس لیے محبت کرنا ہرگز غلط نہیں ہے۔

ایسا ہرگز نہیں تھا۔اُن کی محبت کی شادی نہیں تھی بلکہ پسند کی شادی تھی۔محبت اور پسند میں بہت فرق ہے۔پسند میں کوئی تعلق نہیں بنتا محبت میں تعلق بن جاتا ہے خود پر اختیار نہیں ہوتا محبت کی کوئی حد نہیں ہوتی۔حضرت خدیجہؓ کو آپﷺ کی شخصيت متاثر کی تھی تو انہوں نے نکاح کا پیغام بھیجا تھا ملاقات کا نہیں۔اس لیے قرآن بھی یہی کہتا ہے ”جب کوئی عورت پسند ہو تو اس سے نکاح کر لو“ پسند کا لفظ استعمال ہوا ہے محبت کا نہیں۔یہ کچھ حدود ہے اللہ کی۔جو کوئی ان کو توڑتا ہے وہ سب کچھ پا کر بھی زندگی بھر بے سکون رہتا ہے۔

بہترین زندگی گزارنے کے لیے محبت بہت ضروری ہے لیکن صرف محرم سے۔ ایسی محبت جس میں اللہ کی رضا ہو اسی میں سکون ہے اور یہ بات نہ سمجھنے والے بھی جلد یا بدیر سمجھ جائیں گے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: