نہایت ہی قیمتی آئینہ

وہ آئینہ نہایت ہی قیمتی آئینہ ہے جس میں ہمارے نقائص سامنے آ جا ئیں ۔ اپنے پاؤں اندھوں کی طرح رکھ جیسے وہ پھونک پھونک کر رکھتا ہے ۔ دین کے اصول جاننا ضروری ہے لیکن اس سے زیادہ ضروری ہے کہ روح پر غور کر ے کہ نیک ہے یا نہیں۔

پیار اور محبت زندگی کا پانی ہو تا ہے اس کو اس طرح پیو کہ آپ کی روح میں سما جا ئے۔ جسمانی حس گدھوں کا راستہ ہے۔ ظاہری چکھنا ، چھونا ، سونگھنا ، دیکھا نا ، پانچ حسوں کے علاوہ چھ حسیں اور ہیں جن کا تعلق روح سے ہے وہ قلب ، روح ، نفس ، سِر ، خفیِ اِخفی ہیں ۔ انہی حسیات سے انسان کو معرفتِ حق حاصل ہو تی ہے ۔ جسم کی حسیں ظلمت سے روزی حاصل کر تی ہیں لیکن روح کی حِسیں براہ راست سورج ذاتِ الٰہی سے غذا حاصل کر تی ہیں موت کے وقت جسمانی تکلیف کی طرف توجہ ہو تی ہے تو روح چوری چلی جا تی ہے ۔ انسان کی جس چیز کی طرف توجہ رہے وہ بچ جا تی ہے اور جس سے غفلت بر تتا ہے چوری ہو جا تی ہے قیمتی چیز یعنی اللہ کی طرف توجہ رکھو ۔ جس چیز کی انسان کو فکر ہو تی ہے ۔ اس کی جانب چور نہیں ہو تا !! بے ادب خود کو تباہ کرنے کے ساتھ سارے عالم کو آ گ لگا تا ہے ۔ جس لقمے نے نور اور کمال بڑھا یا تو سمجھ جاؤ وہ حلال کمائی سے حاصل کیا ہوا ہے وہ دل جو غم ، دکھ ، درد اور ہنسی مذاق سے وابستہ ہو تو بتا ؤ وہ دیدار کے قابل ہے؟

اے دل! تُو وسوسے کا مارا ہو گا اگر تُو نے خوشی اور مصیبت میں فرق کر نا چاہا !! جب تک تُورنجیدہ اور سیاہ ہے تو سمجھ لے تو ش ی ط ا ن ملعون کا دُودھ شریک بھائی ہے !! جلد امیر ترین ہو نا چاہتے ہو تو تکا لیف کو برداشت کر نا سیکھو ۔ یہی ایک کام ہے جو تمہیں اصل خزانے کی طرف لے جا ئے گا اور دولت مند بنائے گا جو مسلسل کوشش کر تا ہے وہ ضرور اپنے مقصد میں کا میاب ہو تا ہے !! میں اپنے دُکھ درد سے آنکھوں کے لیے سُر مہ بنا لیتا ہوں تا کہ آنکھوں کے دونوں سمندر موتیوں سے بھر جا ئیں!! منافق نماز میں مقابلے کے لیے آ تا ہے نہ کہ نیاز مندی کے لیے۔ لوگ جو آنسو اُس کے لیے بہاتے ہیں مو تی ہیں لوگ ان کو آنسو سمجھتے
ہیں ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: