آپ ﷺ اور ایک شخص کا خواب

حضوراکرم ؐ نے عجب بات فرمائی کہ جس نے میری اولاد پراحسان کیا اورمیری اولاد غربت کے باعث اس احسان کابدلہ نہ چکا سکی تواس شخص کا بدلہ قیامت کے دن میں چکائوں گا۔ہرات میں ایک سید فیملی تھی ۔ خاوند کا انتقال ہوگیا توبیوہ فاقوں سے مجبورہوکرسمرقند ہجرت کرگئیں۔سمرقنداس وقت بہت متمدن ثقافت کاشہرتھا۔

خاتون سمرقند پہنچیں توان کی بچیاں تھیں بیٹاکوئی نہیں تھاانہوں نے پوچھا یہاں کوئی سخی ہےتو انہیں معلوم ہواکہ اس شہر میں ایک مسلمان اورایکپارسی بہت سخی ہیں توانہوں نے سوچاکہ مسلمان کے پاس جاتی ہوں ۔جب وہ مسلمان کے پاس پہنچیں توانہوں نے اپنامعاملہ بتایاکہ میں آل رسول ؐ سے ہوں خاوندمیرافوت ہوگیاہے اورمیں بہت مجبورہوکریہاں آئی ہوں تواس مسلمان نے کہاکہ کوئی سنددکھائویہاں توہرکوئی کہتاہے کہ میں سیدہوں ،آل رسول ؐ سے ہوں توخاتون نے کہاکہ میں بہت مشکل سے یہاں پہنچی ہوں جان کے لالے پڑے ہوئے ہیں میں سندکہاں اپنے ساتھ اٹھاتی پھروں ۔خاتون مایوس ہوکرآتشپرست کے پاس پہنچی اوراسے کہاکہ میں مسلمانوں کے رسول ؐ کی اولادمیں سے ہوں مجھے کوئی ٹھکانہ چاہیےتواس آتش پرست نے اس سیدزادی کوٹھکانہ دی ااوراپنے بیوی کے ساتھ مل کرسرائے گیا ۔

اوراس سید زادی کی بچیوں کوبھی لے آیا۔ اس مسلمان نے رات کو خواب دیکھا کہ جنت میں ایک محل کے سامنے کھڑ اہے اوراس کے دروازے پرحضور اکرم ؐ کھڑے ہیں یہ پوچھتاہے یارسول اللہ ؐ یہ محل کس کاہے توآپ ؐ نے فرمایاکہ یہ ایک ایمان والے کاہے۔یہ مسلمان کہتاہے کہ یارسول اللہ ؐ میں بھی ایمان والاہوںمجھے عنایت ہوتوآپ ؐ نے فرمایاکہ ایمان والاہے توگواہ پیش کرتیرے پاس کیاسندہے ایمان کی۔وہ کانپ گیاتوآپ ؐ نے فرمایاکہ میری بیٹی تجھ سے ٹھکانہ مانگنے آئی تونے اس سے سندمانگی کہ اپنی سندپیش کر۔اس کی آنکھ کھلی توبہت پریشان ہوانوکروں سے پوچھنے لگاکہ پتاکروبی بی کدھرگئی توانہوں نے جواب د یاکہ وہ توآتش پرست لے گیا۔اس مسلمان نے سردی میں جوتے پہنے نہ کپڑے دوڑ لگائی

اوراس آتش پرست کادروازہ کھٹکھٹانےلگا۔ آتش پرست باہر نکلااس نے کہا کہ میرے مہمان واپس کرو تو اس نے کہاکہ حضوروہ تومیرے مہمان ہیںتواس مسلمان نے کہا کہ میراساراسرمایہ لے لے میں تمہیں تین سودیناردیتاہوں مجھے میرے مہمان واپس کردوتووہ پارسی رونے لگا۔اورکہاکہ حضوردیکھے بغیرسوداکیاتھاا ب جب دیکھ لیاتوواپس نہیں ہوسکتاجس خواب میں تجھ کودھکے ملے اس خواب کومیں نے بھی دیکھاکہ اللہ کے نبی ؐ نےتجھے دورکیااورمیرے طرف متوجہ ہوکرکہاکہ تونے میری بیٹی کوٹھکانہ دیاتجھے اورتیری نسل کوجنت مبا رک ہو۔پارسی نے کہاکہ میں توکلمہ پڑھ چکاہوں اورمیں ایمان لاچکاہوں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: