سب سے بہترین لوگ کون ہیں ؟

جب نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کو اللہ عزوجل نے ساری مخلوقات کے لیے نبی رحمت بنا کر بھیجا ، تین قسم کی عورتوں کو کبھی مت کھونا ؟
رسول اللہ ﷺ سے پوچھا گیا کون سی عورت بہتر ہے ؟ آپ ﷺ نے ارشاد فرمایا وہ عورت سب سے بہتر ہے کہ جب شوہر اس کی طرف دیکھے تووہ شوہر کو خوش کر دے ، جب شوہر کسی کا م کا حکم دے تو اس کا حکم مانے اور شوہر کی مرضی کے خلاف اپنے جان ومال میں تصرف نہ کرے ۔

بیوی اس لئے لڑتی ہے کہ شوہر اس پر توجہ دے اور شوہر اس لئے توجہ نہیں دیتا کہ بیوی لڑتی ہے تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی شانِ رحیمی وکریمی اس صنفِ نازک پر کیوں سایہ فگن نہ ہوتی ، جس کو دنیا آبگینہ جیسے لطیف ونازک شیء کے ساتھ تشبیہ دیتی ہے ؛ بلکہ نرم اور نازک شی کے ساتھ دنیا والوں کی رعایت واہتمام بھی زیادہ ہوتا ہے تو آپ کے رحم وکرم سے عورت کیوں محروم ہوتی ، آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی تعلیمات میں عورت کی رعایت اوراس کی صنفی نزاکت کے ساتھ احکام موجود ہیں ، موجودہ دور کا اس صنف نازک کے ساتھ یہ المیہ ہے کہ اس نے عورت کو گھر کی ملکہ کے بجائے شمع محفل بنادیا ہے ، اس کی نسوانیت اور نزاکت کو تار تار کرنے کے لیے زینتِ بازار اور اپنی تجارت کے فروغ کا آلہٴ کار اور ذریعہ بنادیا، عورت کے لیے پردہ کے حکم میں در اصل اس کی نزاکت کی رعایت ہی مقصود ہے کہ اسے مشقت انگیز کاموں سے دور رکھ کر اس کو درونِ خانہ کی صرف ذمہ داری سونپی جائے ۔اللہ عزوجل اپنے نبی رحمت صلی اللہ علیہ وسلم پر نازل کردہ کتاب میں عورتوں کے تعلق سے فرمایا ہے : عاشروھن بالمعروف اور ان عورتوں کے ساتھ خوبی کے ساتھ گزران کیا کرو ۔

آپ صلی اللہ علیہ وسلم کی صنف نازک کے بہترین برتاوٴ کی تاکید نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے صنف نازک کے ساتھ بہترین سلوک اور برتاوٴ کی تاکید کی ،
خود آپ صلی اللہ علیہ وسلم بھی عورتوں کے ساتھ اچھا برتاوٴ اور ان کے ساتھ حسن سلوک فرماتے ۔ خود نبیِ کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے بھی عورتوں کے ساتھ نیکی ، بھلائی ، بہترین برتاوٴ ، اچھی معاشرت کی تاکید فرمائی ہے ، حضرت عائشہ سے مروی ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا : تم میں سب سے بہترین وہ لوگ ہیں جو اپنی عورتوں کے ساتھ اچھا برتاوٴ کرتے ہیں ، اورمیں تم میں اپنی خواتین کے ساتھ بہترین برتاوٴ کرنے والا ہواور ایک روایت میں نبیِ کریم صلی اللہ علیہ وسلم عورتوں کے ساتھ حسن سلوک کی تاکید کرتے ہوئے فرمایا : حضرت ابوہریرہ فرماتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : میں تم کو عورتوں کے بارے میں بھلائی کی نصیحت کرتا ہوں اور ایک روایت میں نبیِ کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے عورتوں کے ساتھ حسنِ سلوک اور بہترین برتاوٴ کو کمالِ ایمان کی شرط قرار دیا ہے ، حضرتِ عائشہ صدیقہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : مسلمانوں میں اس آدمی کا ایمان زیادہ کامل ہے جس کا اخلاقی برتاوٴ (سب کے ساتھ )(اور خاص طور سے )بیوی کے ساتھ جس کا رویہ لطف ومحبت کا ہو۔ اللہ ہم سب کا حامی وناصر ہو۔ آمین

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: