شاذروان کعبہ کے کس حصے کو کہتے ہیں ؟

اس سے مراد کعبہ شریف کی دیوار کے نچلے حصہ میں ابھرا ہوا منڈیر نما حصہ ہے جو مطاف کی زمین سے قریب ہے ، البتہ حطیم کی سمت ابھری ہوئی پٹی جس پر کھڑے ہوکراور کعبہ سے چمٹ کر زائرین دعا مانگتے ہیں یہ کعبہ کا حصہ ہے شاذروان نہیں ہے ، زمین سے اس پٹی کی بلندی تقریبا 13 سینٹی میٹر اور اس کا عرض 45 سینٹی میٹر ہے ، شاذروان کی بابت ایک روایت ہے کہ حضرت عبداللہ بن زبیر (رضی اللہ عنہ ) نے اس کی تعمیر کروائی تاکہ دیواروں کی بنیادوں میں پانی سرایت نہ کرے، دوسری حکمت یہ بیان کی جاتی ہے کہ اس میں پیتل کے گڑے گاڑ دیئے گئے ہیں جن سے غلاف کعبہ بندھا رہتا ہے ، شائید شاذروان کے بنانے میں یہ بھی مصلحت پیش نظر رہی ہو کہ غلاف کعبہ لوگوں کی رگڑ سے محفوظ رہے اور ازدحام میں طواف کرنے والوں کے جسم بھی کعبہ شریف کی دیواروں سے مجروح نہ ہوں ، شاذروان میں لگا ہوا پتھر عمدہ قسم کا مرمر اور
نہایت مضبوط ہے ، سعودی حکومت 1417ھ میں تجدید کعبہ شریف کی ترمیم کے وقت شاذروان کی تجدید بھی ہوئی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: