فتح مکہ کے موقع پر رسول ﷺ کی بیت اللہ میں نماز

جب رسول اللہ ﷺ کعبہ کے اندر داخل ہوئے تو حضرت بلال رضی اللہ عنہ بھی آپ رحمۃ للعالمینﷺ کے ساتھ تھے ، جب آنحضرت ﷺ باہر نکل آئے تو حضرت بلال رضٰی اللہ عنہ پیچھے رہ گئے ، عبداللہ بن عمر رضٰی اللہ عنہ نے بلال رضٰی اللہ عنہ سے پوچھا کہ آنحضرت ﷺ نے کس جگہ نماز پڑھی ہے اور یہ نہ ہوچھا کہ کس قدر پڑھی ہے ؟

پھر ابن عمر رضی اللہ عنہ جب کعبہ میں داخل ہوتے تھے تو سیدھے اندر جا کر دروازہ کی طرف پشت کرکے تین ہاتھ دیوار سے پرے کھڑے ہوکر نماز پڑھتے تھے اور کہتے تھے کہ یہی جگہ آنحضرت ﷺ کی نماز کی بلال رضٰی اللہ عنہ نے ان کو بتائی ہے ، سیرت ابن حشام جلد 1 ص 279 رسول اللہ ﷺ بیت اللہ میں داخل ہوئے آپ ﷺ کے ہمراہ حضرت اسامہ بن زید رضی اللہ عنہ ، حضرت فضل بن عباس رضی اللہ عنہ ، حضرت عثمان بن طلحہ رضی اللہ عنہ اور حضرت بلال رضی اللہ عنہ بھی تھے آپ ﷺ نے بلال کو فرمایا اور انہوں نے دروازہ بند کردیا آپ دیر تک وہاں ٹھرے پھر باہر آئے ، حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہ کا بیان ہے سب سے پہلے حضرت بلال رضٰی اللہ عنہ سے میری ملاقات ہوئی پوچھا رسول اللہ ﷺ نے کہاں نماز پڑھی ہے بتایا یہاں دوستونوں کے درمیان ، دروازے کے سامنے غربی دیوار سے تین ہاتھ کے فاصلہ پر ، بیت اللہ کے چھ ستون تھے شرقی تین ستونوں کو پیچھے کیا اور غربی دوستونوں کو دائیں طرف اور ایک ستون کو بائیں طرف نماز پڑھی سیرت النبی ﷺ تاریخ بن کثیر جلد 2 جہاں حضور محترم ﷺ نے نماز ادا فرمائی تھی اس جگہ کو سفید ٹائل سے واضح کیا ہے ،

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: