درود شریف کی اہمیت


اللّٰہ تعالٰی نے ارشاد فرمایا ہے، اے لوگوں جو ایمان لاٸے ہو رسول اللّٰہ ﷺ پر صلوٰة و سلام پڑھو چنانچہ ارشاد فرمایا :
يٰۤـاَيُّهَا الَّذِيۡنَ اٰمَنُوۡا صَلُّوۡا عَلَيۡهِ وَسَلِّمُوۡا تَسۡلِيۡمًا‏ ۞

رسول اللّٰہ ﷺ نے ارشاد فرمایا جو شخص مجھ پر میری قبر کے پاس درود شریف پڑھتا ہے اس کو میں خود سنتا ہوں اور جو مجھ سے فاصلے پر درود پڑھتا ہے وہ مجھ کو پہنچا دیا جاتا ہے یعنی بذریعہ ملاٸکہ۔ (بیہقی، شعب الایمان، سنن نساٸی، مسنددارمی، سنن ابی داٶد، زادالسعید)

رسول اللّٰہ ﷺ نے ارشاد فرمایا جو شخص مجھ پر درود بھیجے کسی کتاب میں تو ہمیشہ فرشتے اس پر درود بھیجتے رہیں گے جب تک میرا نام اس کتاب میں رہے گا۔ (طبرانی، زادالسعید)

جمعہ کے خطبہ میں جب حضور اکرم ﷺ کا نام مبارک آوے یا خطیب یہ آیت پڑھے ۔
يٰۤـاَيُّهَا الَّذِيۡنَ اٰمَنُوۡا صَلُّوۡا عَلَيۡهِ وَسَلِّمُوۡا تَسۡلِيۡمًا‏ ۞
تو اپنے دل میں زبان کو حرکت دیٸے بغیر ﷺ کہہ لے۔ (درالمختار)
درمختار میں ہے کہ درود شریف پڑھتے وقت اعضاء کو حرکت دینا اور آواز بلند کرنا جہل ہے۔ اس سے معلوم ہوا کہ بعض جگہ جو رسم ہے کہ نمازوں کے بعد حلقہ باندھ کر بہت چلا چلا کر درود شریف پڑھتے ہیں یہ مناسب نہیں۔

جب اسم مبارک لکھے صلٰوة و سلام بھی لکھے یعنی ﷺ کو پورا لکھے اس میں کوتاہی نہ کرے ”ص“ یا صلعم پر اکتفانہ کرے۔

آپ ﷺ کے اسم گرامی سے پہلے سیدنا بڑھا دینا مستحب اور افضل ہے۔ (درمختار)

بے وضو درود شریف پڑھنا جاٸز اور با وضو پڑھنا نور علیٰ نور۔ (زادالسعید)

حدیث شریف میں ہے کہ جمعے کے دن تم مجھ پر کثرت سے درود پڑھا کرو اس درود میں فرشتے حاضر ہوتے ہیں اور یہ درود مجھ پر پیش کیا جاتا ہے۔ (ابن ماجہ، ابوداٶد، نساٸی، زادالسعید)

ابو حفص ابن شاہین رحمتہ اللّٰہ علیہ نے حضرت انس رضی اللّٰہ عنہ سے روایت کیا ہے کہ رسول اللّٰہ ﷺ نے ارشاد فرمایا کہ جو شخص مجھ پر ہزار بار درود پڑھے تو جب تک وہ اپنی جگہ جنت میں نہ دیکھ لے نہ مرے گا۔ (زادالسعید)

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: