فاصلہ تمہارا اللہ سے ہے

فاصلہ تمہارا اللہ سے ہے، اللہ کا تم سے نہیں، جسے تم میلوں کی دوری سمجھ رہے ہو وہ تو بس تمہاری ایک پکار کی بات ہے، جو آواز دیوار کے اس پار نہیں جا سکتی وہ اسےسات آسمانوں کےاس پار سن لیتا ہے، تو پھر کیا ہے ایسا جو تمہیں اب بھی اس سے مانگنے سے روکے ہوئےہے؟ جس نے یہ دل بنایا ہےاس سے بہتر اس دل کا حال اور کون جان سکتاہے؟

تم اس پر توکل رکھ کر چلو تو سہی، تمہاری ایک دعا تمہارے اور معجزوں کے درمیان آنے والی ہر رکاوٹ چیر دیتی ہے تو پھر توکل رکھو وہ انہیں ہی وسیلہ بنادے گا جو تمہارے لیے رکاوٹ بنے ہوئے ہیں جو حضرت موسیٰ علیہ السلام کیلئےسمندرکے بیچ راستہ بناسکتاہےوہ تمہارے لئے بھی راستہ بنا دیگا، جہاں تمہاری کوششیں ناکام ہوجاتی ہیں وہاں سے اس کے کن کے معاملات شروع ہوتے ہیں۔

یہ دنیا فانی ہے اور اس دنیا کے غم بھی مستقل نہیں ہے۔ صبر و تحمل کا دامن تھام کر چلیں۔ جو انسان آپکے ساتھ جیسا چل رہا ہے چلنے دیں کسی کو مت پرکھیں ورنہ دکھ آپ کو ہوگا۔ بس اللّہ تعالیٰ پر چھوڑ دیں صبر کریں یقین رکھیں سب ٹھیک ہوگا۔ اپنے لیے اتنا اچھا سوچیں اور کریں بروز محشر شرمندگی نا اٹھانی پڑے جب روبروئے رسول اللّٰہ اور اللہ ہوں.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: