بارش آئ گی

میری اماں لوبیا بہت شوق سے بناتی تھیں مگر پکانے سے پہلے انکو صاف کرتیں اور گندے اور خراب دانوں کو پیچھے صحن میں پھینک دیتی تھی صرف اچھے دانوں کو پکاتیں تھیں

مگر جیسے ہی بارش آتی…….
یہ گندے اور خراب دانے بیج بن جاتے اور پھوٹ پڑتے تھے اور صحن ہریالی سے بھر جاتا تھا اور یہ بہت خوبصورت احساس ہوتا تھا

کس قدر دلچسپ بات ہے کہ وہی انسان جس نے انکو خراب جان کر پھینکا ہوتا وہ انکو دیکھ کر خوش ہو جاتا اور انکی دیکھ بھال کے بعد انکا خوب فائدہ اٹھاتا
اب میری بات سنیں

رونا نہیں جب آپکو صحن میں اکیلا پھینک دیا جائے
اسوقت بھی نہیں رونا جب آپکو ریجیکٹ کر دیا جائے
اسوقت بھی نہیں رونا جب کوٸ آپکو کمتر ثابت کر رہے ہو
کوئی بوجھ سمجھے, کوئی بہت گیا گزرا جانے ,
بھلے کوئی احساس دلائے کہ یہ ماضی کی غلطیوں کا بھگتان ہے
گھبرانا نہیں ہے،بارش آئے گی
صبر کرنے والوں کے لیے اجر ہے اور یہ اللہ پاک کا وعدہ ہے
یاد رکھنا
وہی لوگ جنھوں نے آپکا انکار کیا تھا خود آپکو بلانے آئیں گے

اللہ پاک اپنے بندوں سے بہت محبت کرتا ہے وہ رحمت کرے گا بس اس سے جڑے رہنا عنقریب سب دیکھ لیں گے آپ کس قدر قیمتی اور انمول تھے

مشکل میں خود کو سنبھالیے اور دوسروں کا سہارا بننے کی کوشیش کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: