آپ ﷺ جانوروں کے لے بھی رحمت

جانوروں کیلئے رحمت

نبی اکرمﷺ کی رحمت سے جانوروں نے بھی رحمت پائی ایک مرتبہ ایک باغ میں تشریف لے گئے تو ایک اونٹ بلبلا تا ہوا آپ ﷺ کے قدموں میں آیا.

آپ ﷺ نے اس کے مالک کو بلا کر فرمایا کہ میں بے زبان جانور ہے تمہیں چاہئے کہ اس کے ساتھ نرمی برتو یہ شکوہ کر رہا ہے کہ تم اس سے زیادہ کام لیتے ہو اور اسے چارہ تھوڑ ادیتے ہو سبحان اللہ! جانور بھی آپﷺکی خدمت میں آ کر اپنی تکالیف بیان کرتے تھے۔

زر,اسی طرح ایک مرتبہ حضور پاک ﷺ ایک مدینہ طیبہ سے باہر تشریف لے جارہے تھے ایک یہودی نے ہرنی پکڑی ہوئی تھی، آپ ﷺ جب قریب سے گزرے تو اس ہرنی نے آپ ﷺ سے کہا اے اللہ کے نبی ﷺ مجھے اس نے پکڑ لیا ہے اس سامنے والے پہاڑ میں میرا بچہ ہے اور اس کو دودھ پلانے کا وقت ہو گیا ہے مجھے دیر ہورہی ہے میری مامتا جوش مار رہی ہے کہ میں اسے دودھ پلالوں آپ مجھے تھوڑی دیر کیلئے آزاد کرادیجئے۔رسول اللہﷺ نے اس کی بات سنی تو یہودی سے کہا تھوڑی دیر کیلئے اسے آزاد کر دو می دودھ پلا کر واپس آ جاۓ گی ۔اس نے کہا بڑی مشکل سے اسے پکڑا ہے کیا آپ اس کی ذمہ داری لیتے ہیں؟ آپﷺ نے فرمایا کہ میں اس کی ذمہ داری قبول کرتا ہوں چنانچہ ہرنی کو چھوڑ دیا گیا وہ اسی وقت چھلانگیں مارتی ہوئی پہاڑی کی طرف گئی آپ ﷺ بھی وہیں تھے کہ وہ دوبارہ بھاگتی ہوئی واپس آ گئی یہودی ہرنی کی اس اطاعت کو دیکھ کر حیران رہ گیا۔ چنانچہ اس نے کلمہ پڑھا اور مسلمان ہو گیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: