بے مثال ایثار

ابراہیم نخعی اور ابراہیم تیمی ، یہ دونوں حضرات تبع تابعین کے اعلی طبقہ میں ہیں ۔

ظالم حجاج بن یوسف نے جس طرح ہزاروں علماء وفضلاء کوجیل خانہ میں سڑایا اور ہزاروں کو شہید کیا یا کرنا چاہا۔ان میں ابراہیم نخعی بھی تھے کہ تجارتی سپاہی آپ کی تلاش میں پھرتے اور آپ اس وجہ سے روپوش رہتے ۔ ایک روز کسی مخبر نے سپاہیوں کو خبر دی کہ فلان جگہ ابراہیم ہیں، وہاں آپ کے ہم عصر ہیں اور ابراہیم تیمی کے نام سے موسوم ہیں ، اتفاق سے موجود تھے۔

سپاہی ان کے پاس آے اور کہا کہ ابراہیم کون ہیں اور کہاں ہیں ابراہیم جانتے تھے کہ یہ لوگ میری تلاش میں نہیں بلکہ ابراہیم تیمی کی طلب میں ہیں لیکن آپ نے مخیر العقول ایثار سے کام لیا کہ ابراہیم نخعی کا پتہ دینے کے بجاۓ یہ کہ کر خود گرفتار ہو گئے کہ میرا ہی

نام ابراہیم ہے۔ اور حجاج کے حکم سے دیناس نامی جیل خانہ میں قید کر دیئے گئے جس میں نہ دھوپ سے بچنے کے لئے کہیں سایہ تھا اور نہ سردی سے بچاؤ کی کوئی صورت ۔ پھر اس میں بھی دو دو آدمیوں کو ایک زنجیر میں جکڑا گیا تھا۔ حضرت ابراہیم تیمی اس قید کی شدت سے اس درجہ لاغر کمزور ہو گئے کہ ان کی والدہ ان سے ملنے جیل خانہ میں آئیں تو دیکھ کر پہچانا نہیں ، آخر کاراسی جیل خانہ میں آپ کی وفات ہوگئی ۔لوگوں نے آپ سے عرض بھی کیا کہ جب سپاہی آپ کی طلب میں نہ تھے تو آپ بے اختیارخود کیوں گرفتار ہوئے فرمایا کہ میں نے مناسب نہ سمجھا کہ ابراہیم نخعی جیسے امام وقت کولوگ گرفتار کر یں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: