دُعاءِ کَرب ہر مشکل کے لیے

حضرت ابوبکر رازی رحمتہ ﷲ علیہ بتاتے ہیں کہ میں اصفہان میں ابونعیمؒ کے پاس تھا۔ایک بوڑھے نے ان سے کہا کہ ابوبکر بِن علی کو بادشاہ کے پاس لے جا کر قید کر دیا گیا ہے۔چنانچہ میں نے خواب میں رسول ﷲ صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم کی زیارت کی تو حضرت جبریل علیہ السّلام آپ صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم کے دائیں طرف تسبیح پڑھتے ہوئے ہونٹ ہِلا رہے تھے۔اس پر حضور نبی اکرم صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم نے مجھ سے فرمایا:
” ابوبکرؒ سے کہہ دو کہ وہ ” دُعاءِ کَرب ” پڑھیں جو صحیح بخاری میں ہے۔تاکہ ﷲ تعالیٰ انہیں رِہائی دے دے۔”
وہ فرماتے ہیں کہ صبح ہونے پر میں نے انہیں بتایا تو انہوں نے دُعا کی۔چنانچہ کچھ ہی دیر میں ﷲ تعالیٰ نے انہیں رِہائی دے دی۔

دُعاءِ کَرب:

دُعاءِ کَرب جسے اِمام بخاری و مسلم رحمتہ ﷲ علیہ نے لِکھا ہے،حضور نبی اکرم صلی ﷲ علیہ وآلہ وسلم کی زبان مُبارک سے نِکلی ہوئی یوں ہے:

لَا إِلٰهَ إِلَّا اللَّهُ الْعَظِيمُ الْحَلِيمُ لَا إِلََٰهَ إِلَّا اللَّهُ رَبُّ الْعَرْشِ الْعَظِيمِ لَا إِلٰهَ إِلَّا اللَّهُ رَبُّ السَّمٰوَاتِ وَرَبُّ الأَرْضِ وَرَبُّ الْعَرْشِ الْكَرِيمِ۔

” ﷲ کے سِوا کوئی معبود نہیں وہ عظیم اور حلیم ہے۔اس کے سِوا کوئی معبود نہیں وہ عرشِ عظیم کا ربّ ہے۔ﷲ کے سِوا کوئی معبود نہیں وہ آسمان اور زمین کا ربّ ہے۔ﷲ کے سِوا کوئی معبود نہیں وہ عرشِ کریم کا ربّ ہے۔”

( صحیح البخاری،کتاب الدعوات،باب الدُعا عبدالرب،جِلد ۴،صفحہ ٢٠٢،رقم الحدیث:٦٣۴۶ )

نام کتاب = شرح قصِیدہ بُردہ شریف
صفحہ = ٣٩٣
تالیف = العلّامہ عمر بِن احمد الخرپوتی
مترجم = شاہ مُحَمَّد چِشتی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: