عطر کے بدلے جواہرات

ملک شام فتح ہو جانے کے بعد قیصر روم کے ساتھ دوستانہ مراسم ہو گئے تھے اور خط و کتابت رہتی تھی ۔

ایک دفعہ فاروق اعظم رضی اللہ تعالی عنہ نے جب ایک خط لکھ کر قصیر روم کے پاس قاصد روانہ کیا تو آپ کی اہلیہ محترمہ حضرت ام کلثوم رضی اللہ تعالی عنہا نے اس قاصد کو عطر کی چند شیشیاں دیں تا کہ وہ قیصر روم کی بیوی کو یہ تحفہ پہنچادے۔ قیصر روم کی بیوی نے جواباً شیشیوں کو جواہرات سے بھر کر بھیجا ۔
فاروق اعظم رضی اللہ تعالی عنہ کو جب معلوم ہوا تو فرمایا:” وہ عطر تمہارا تھا لیکن جو قاصد لے کر گیا وہ سرکاری تھا ۔
اس کے مصارف بیت المال سے ادا کئے گئے تھے اس لئے قیصر روم کی بیوی کے بھیجے ہوۓ جواہرات تمہارے نہیں ہو سکتے ؟‘‘ آپ نے اپنی اہلیہ سے جواہرات لے لئے اور انہیں بیت المال میں جمع کر دیا۔ان کے بدلے میں اپنی اہلیہ کو کچھ معاوضہ دے کر راضی کر دیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: