تنہائی میں کیا سیکھا

تنہائی بڑی عجیب شے ہے یہ آپکو آپ سے ملاقات کرواتی ہے۔اس میں کبھی کبھار ہم سوچوں کے سفر پر روانہ ہوجاتے ہیں۔ یہ سوچ کے دھارے کبھی ہمیں ماضی کے دھندلکوں میں لے جاتے ہیں، کبھی مستقبل کے حسین خواب دکھلاتے ہیں۔ رات طبیعت پر نجانے کیوں بوجھ سا محسوس ہو رہا تھا، بے چینی ایسی تھی کہ کم ہی نہیں ہو پا رہی تھی۔ذکر اللہ کرتے کرتے اپنے آپ کو ٹٹولا تو سمجھ آیا، آہ تو یہ بات تھی جو حزین قلب کا سبب تھی۔

ایک دو روز قبل اللہ سبحانہ وتعالی نے میرے تایا ذاد بھائی کے بیٹے کو جسکی عمر گیارہ سال کے لگ بھگ ہوگی، حافظ قرآن کے رتبے سے نوازا، ختم قرآن کی دعا ہوئی، مبارک بادوں کا تبادلہ ہوا۔ ذہن کے کسی گوشے میں اچانک خیال آیا، میرا اور تایا ذاد بھائی کا نکاح ایک ہی دن ہوا تھا۔گر اللہ رب العزت مجھے بھی اولاد کی نعمت سے نوازتے تو شاید وہ بچہ بھی عمر کے اس حصہ میں ہوتا۔اسی خیال کو رات تنہائی کے اس پہر میں تقویت ملی اور دل تھا کہ قرار ہی نہیں پارہا تھا، اللہ سے راز و نیاز کرتے کرتے آنکھوں سے آنسوؤں کی وہ روانی کہ تھمنے کا نام نہیں اور اس دن سوچا کہ مجھے تو بے آواز رونے کا فن بھی آتا ہے کیوں کہ میرے مشفق و مہربان شریک حیات پرسکون سورہے تھے۔

ان کی نیند میں خلل نہ ہو اسلیے آواز کو اپنے اندر ہی دبا لیا۔ شکر ہے رب کریم کا اس سے پہلے کہ میں اپنے رب سے گلہ شکوہ کرتی اور نا امید ہوتی ہر دفعہ کی طرح میرا علم اور میری اندرونی طاقت میرے کام آئی جس نے مجھے مثبت سوچ کی طرف راہنمائی فرمائی اور ذہن کے کسی گوشے میں فلفور بابا جی اشفاق صاحب مرحوم کا وہ جملہ آیا، کسی نے ان سے پوچھا: بابا جی! حسد کیا ہے؟ انھوں نے کہا “رب کی تقسیم سے اختلاف رکھنا” دل کو سکون سا مل گیا اللہ نہ کرے کہ میں کبھی حاسدین میں سے ہوں نہ ہم اللہ کی تقسیم سے اختلاف کرتے ہیں نہ کبھی کریں گے۔

رب کی تقسیم سے اختلاف رکھنے سے یہی مراد ہے کہ فلاں کو اللہ نے کیوں نوازا مجھے کیوں نہیں۔ اس لیے ایسی سوچ کو فنا کر دیں۔ بس یہی سوچیں ” وہ نوازنے پہ آئے تو نواز دے زمانہ” کس کو کب اور کیسے عطا کرنا ہے میرے رب سے بہتر کوئی نہیں جان سکتا۔ سوچ میں بڑی طاقت ہوتی ہے، مجھے تو منفی سوچ آتی ہی نہیں، یہ کہنا غلط ہوگا۔ منفی سوچ کو پچھاڑ دینا یہ طاقت کی علامت یے، ہمیشہ مثبت سوچیں اور زندگی میں خوشیوں کیساتھ آگے بڑھتے جائیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: