نبی ﷺ کی دعانے گھر بسایا

عبداللہ معافی کہتے ہیں کہ ہمارے قبیلے کاایک شخص مازن بن عضوب عمان میں ایک بستی سمایا میں ایک بت کی خدمت کیا کرتا تھا.

اذن کہتا ہے ایک دن ہم نے بت پر بھینٹ چڑھائی (اس کے چرنوں میں جانور ذبح کیا تو میں نے بت کے اندر سے یہ آوازسنی …..اے مازن سنوخوش ہو جاؤ کہ خیر ظاہر ہوگئی اور شرچھپ گیا… مضر سے ایک نبی اللہ کا دین لے تشریف لے آیا ہے اب تم بت پرستی چھوڑ دو….. تاکہ جنم سے آزاد ہو جاؤ گے ….. میں اس آواز پرسخت دہشت زدہ ہو گیا ….. چند دن بعد ہم نے پھر ایک بھینٹ چڑھائی تو بت سے پھر یہ آواز آئی…. سنو! حامل نہ بنو یہ نبی مرسل حق لے کر آگئے ہیں ان پر ایمان لاؤ تا کہ آتش شعلہ بار سے نجات پاسکو جس کا ایندھن پھر ہیں….. مازن کہتا ہے تو میں نے سوچا یہ بڑی تعجب خیز بات ہے یقینا قدرت مجھے کسی نعمت سے نوازنا چاہتی ہے….. چند دن بعد اہل حجاز میں سے ایک آدمی ہمارے پاس آیا میں نے کہا کوئی تازہ خبر؟ کہنے لگا ایک نبی ظاہر ہوا ہے

جس کا نام احمد (ﷺ) ہے اطاعت خداوندی کا حکم دیتا ہے….. میں نے بت کے ٹکڑے کئے …..اورسفر کرتا ہوا بارگاہ رسالت مآب ﷺ میں جا کر حاضر ہوا…..

(حوالہ ایضا)

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: