تُرک قوم سینے پہ ہاتھ کیوں رکھتے ہیں

ترکیوں کی پرانی اور بہت پیاری عادت ہے کہ وہ جب بھی رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا مبارک نام سنتے ہیں تو اپنے ہاتھ دل پہ رکھتے ہیں, ترکوں کے دل پہ ہاتھ رکھنے کی اصل حکمت یہ ہوتی ہے کہ

کیونکہ جب مومن کے سامنے جناب محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا ذکر مبارک ہوتا ھے تو اسکا دل دھڑک اٹھتا ھے اور مچل جاتا ھے
رسول پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی محبت میں ان صلی اللہ علیہ وسلم کی زیارت کے شوق میں یوں پھڑکتا ھے گویا ابھی سینہ چیر کر باہر آ جائے گا

تو مومن دل پر ہاتھ رکھ کر دل کو تسلی دیتا ھے کہ اے دل صبر کرو ابھی اس پاک ذات صلی اللہ علیہ وسلم سے ملاقات کا وقت نہیں آیا

ھماری ان سے ملاقات میدانِ محشر میں ہوگی
حوضِ کوثر پہ ہوگی لہذا ابھی صبر کرو

کیا ہی بہترین لوگ تھے وہ کتنا ہی باکمال انداز تھا ان کا وہ نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کی محبت میں مستغرق رہا کرتے تھے
اللہ تعالیٰ ہمیں بھی محبوب کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا عشق و ادب عطاء فرمائے،،،

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: