فرشتے کب ہنستے ہیں

ایک دن رسول اکرم صل اللہ علیہ والہ وسلم نے حضرت جبرائیلء سے پوچها!! کیا فرشتے بهی کبهی ہنسا کرتے ہیں؟جبرائیل نے عرض کیا، جی ہاں یا رسول الله صہ ، فرشتے تابوت پر رکهی.

اُس عورت کی میت پر ہنستے ہیں جو جب تک زندہ ہوتی ہے تو پردہ و حجاب نہیں کیا کرتی ، لیکن جب مَر جاتی ہے تو (اس کے تابوت پر اور) اس کی قبر کی لحد میں اُس پر چادر ڈالی جاتی ہے تا کہ نامحرم اس کا جسم یا جسمانی بناوٹ نہ دیکھ سکیں.یہ صورتحال دیکھ کر فرشتے ہنستے ہیں اور کہتے ہیں کہ جب تک یہ عورت دیکهنے لائق تهی تو اس نے اپنے آپ کو پردہ و حجاب میں نہیں رکها اور اب جبکہ اس کی میت سے سب کو گِهن آتی ہے، اسے چادر سے چهپایا جا رہا ہے!رشاد رب العزت ہے کہ!!
الَّذِیۡ خَلَقَ الۡمَوۡتَ وَ الۡحَیٰوۃَ لِیَبۡلُوَکُمۡ اَیُّکُمۡ اَحۡسَنُ عَمَلًا ؕ وَ ہُوَ الۡعَزِیۡزُ الۡغَفُوۡرُ ۙ . سورة الملك
جس نے موت اور حیات کو اس لئے پیدا کیا کہ تمہیں آزمائے کہ تم میں اچھے کام کون کرتا ہے، اور وہ غالب(اور) بخشنے والا ہے۔انَّ الَّذِیۡنَ یَخۡشَوۡنَ رَبَّہُمۡ بِالۡغَیۡبِ لَہُمۡ مَّغۡفِرَۃٌ وَّ اَجۡرٌ کَبِیۡرٌ﴿سورة الملك﴾
بیشک جو لوگ اپنے پروردگار سے غائبانہ طور پر ڈرتے رہتے ہیں ان کے لئے بخشش ہے اور بڑا ثواب ہے۔
ﺍللہ ﺗﻌﺎﻟٰﯽ ﺗﻮ ﻋﻮﺭﺕ ﮐﻮ ﻣﺮﻧﮯ ﮐﮯ ﺑﻌﺪ ﺑﮭﯽ ﻣﺮﺩ ﺳﮯ ﺯﯾﺎﺩﮦ ﮐﻔﻦ ﮐﺎ ﮐﭙﮍﺍ ﻋﻄﺎ ﻓﺮﻣﺎﺗﺎ ﮨﮯ ۔ ﻋﻮﺭﺕ ﮐﻮ ﭼﺎﮨﯿﮯ ﮐﮧ ﺩﻧﯿﺎ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﺍﭘﻨﮯ ﭘﺮﻭﺩﮔﺎﺭ ﮐﻮ ﺭﺍﺿﯽ ﮐﺮﮮ۔

:خدا پاک ہم سب کو دین اسلام پر چلنے کی توفیق دے .آمین

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: