بھوک کی تعریف

لوگوں نے حضرت بایزید بسطامی رحمۃ اللہ سے پوچھا کہ_ آپ بھوک کی اس قدر تعریف کیوں فرماتے ہیں ؟

فرمایا- اگر فرعون بھوکا ہوتا تو “انا ربکم الاعلی” نہ کہتا متکبر کو معرفت الہی کبھی میسر نہیں ہوتی،
سوال کیا گیا کہ- متکبر کون ہوتے ہیں ؟
فرمایا- جن کو تمام کائنات میں اپنا نفس زیادہ اچھا نظر آئے-
پوچھا- کہ آپ پانی پر چلتے ہیں
فرمایا- کہ لکڑی کا ٹکڑا بھی پانی پر تیرتا ہے
پھر پوچھا- کہ آپ ہوا میں اڑتے ہیں
فرمایا- کہ پرندے بھی ہوا میں اڑتے ہیں
پھر پوچھا- کہ آپ ایک رات میں کعبہ مکرمہ میں جا پہنچتے ہیں
فرمایا- کہ جادوگر بھی ایک رات میں ہند سے دماوند میں پہنچ جاتا ہے
سوال کیا گیا کہ-پھر مردوں کا آخر کونسا کام ہے؟
فرمایا کہ- اللہ تعالی کے سوا اور کسی سے دل نہ لگائیں-

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: