معاشرہ اور عورت

جس کالباس ضعیف اور ہلکا ہو گیا اس کا ایمان ضعیف ہو گیا شیخ سعدی عورتوں کو ضعف اور ستر سے – پیدا کیا گیا ہے ، ضعف کا علاج خاموشی اور ستر کا علاج پر دہ ہے شیخ سعدی
کبھی غصے میں بھی طلاق کا لفظ زبان پر نہ لاؤ ، اللہ کو یہ عمل سخت لاؤ ، ناپسند ہے اور عورت کی دل شکنی کا بے شیخ سعدی

مسجد وں میں اولا د کی بجاۓ اولا و نرینہ کی دعامانگناہی بتاد یتا ہے کہ ہمارا معاشرہ بیٹی کا دشمن ہےعورت میں ایک کمزوری ہوتی ہے جس کا علاج حمل ہے اور اسے رنج ( تکلیف ) نہیں دینا چاہیے ۔ شیخ سعدیبد تمیزی عورت کیلئے ڈھال ہے اگر یہ نہ ہو تو لوگ اسے کچا چہا جائیں زند گی میں خوش رہنے کیلئے بہ خ ر زیادہ ہمت نہیں ، بلکہ بہت زیادہ ، بلک بے حسی چاہیے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

%d bloggers like this: