محبت کہاں سے شروع ہوتی ہے

ہماری محبتوں کی اوقات تو بس اتنی سی ہے کہ اچھائی دیکھ کر متاثر ہو جاتے ہیں اور برائی دیکھ کر باغی ہو جاتے ہیں ۔ اور ہمہیں لگتا ہے کہ جو ہم کر رہے ہیں وہ سہی ہے باقی جو کرتے ہیں وہ غلط ہے ۔درحقیقت جب ہمارے اندر اچھائی آتی ہے تو ہمہیں اپنی ذات سے فرشتوں سا گمان ہونے لگتا ہے

جس کی وجہ سے ہم دوسروں کی نیتوں پر شک کرنے لگتے ہیں اور ان کی برائیوں کو قبول کرنے سے قاصر ہو جاتے ہیں۔ غلطیوں پر چھوڑنے والے تو آپ کو بہت مل سکتے ہیں لیکن غلطیوں کو درگزر کر کے گلے لگانے والے لاکھوں میں نہیں کروڑوں میں ایک ہوتے ہیں ۔۔۔ محبت ہر حال میں ساتھ نبھانے کا نام ہے اچھائی دیکھ کر گلے لگانا اور برائی دیکھ کر دور پھینک دینا محبت نہیں خودغرضی ہے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: