ازدواجی زندگی کا ایک اہم اصول

امیر المومنین عمر رضی اللّٰہ عنہ کے زمانے کا واقعہ ہے کہ ایک شخص نے اپنی بیوی کو قسم دے کر پوچھا کہ کیا وہ اس سے محبت کرتی ہے؟ بیوی نے کہا: نہیں۔

سیدنا عمر کو اس کی خبر ملی تو اس خاتون سے پوچھا: کیا تمھی وہ عورت ہو جو اپنے شوہر سے کہتی ہو کہ تم اسے پسند نہیں کرتی۔ کہنے لگی: اس نے مجھے قسم دی تھی تو مجھے جھوٹ بولنا گوارا نہ ہوا۔ فرمایا: تم جھوٹ ہی کہہ دیتی؛ اگر تم دوسرے کو پسند نہ بھی کرو رتو اس سے اس کا اظہار نہ کرو؛ کم ہی گھرانے ہیں جو محبت کی بنیاد پر استوار ہیں؛ لوگ تو اسلام اور احسان کی اساس پر ایک دوسرے کے ساتھ زندگی کرتےہیں! (المساوىءللخرائطي،١٧٨- صحيح)
اس لیے ایسے تلخ سچ سے گریز کرنا چاہیے جو آپ کی زندگی میں زہر گھول دے اور دلوں میں نفرتوں کے بیج بو دے؛ بل کہ دوسرے کی خامیوں کو نظر انداز کر کے اس کی خوبیوں کو مدنظر رکھنا چاہیے اور خاندان کے شیرازے کو برقرار رکھنے کے لیے ناخوش گوار صورت حال کو بھی خوش گوار بنانے کی سعی کرتے رہنا چاہیے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: