سفر علم جنت کا راستہ


قرآن وحدیث کا حاصل کرنا دین و دنیا کی سعادت مندی کا زریعہ ہے۔ حدیث قدسی میں اللہ تعالی نے فرمایا ہے: ۔ میں جو علم دین قرآن و حدیث کے طلب کے راستہ کو اختیار کر ے توہم اس کے لئے جنت کے راستہ کو آسان کر دیں گے۔

اور جو دینی اور شرعی علم حاصل کرتے کرتے مر جائے تو اس کے اور نبی کے درجہ میں صرف ایک درجہ کا فرق رہے گا۔ رسول اللہ نے فرمایا ہے:یخي بي الإسلام بينه وبين الليبيين درجة واحدة في الجنة(دارمی) جس کے پاس اس حال میں موت آئے کہ وہ اسلام کو زندہ کرنے کے لئے علم حاصل کر رہا تھا تو جنت کے اندر اس میں اور نبیوں کے درمیان صرف ایک ہی درجه (نبوت) کا فرق رہے گا۔ اس علم سے علم قرآن اور حدیث مراد ہے۔ اس سے طلب حدیث کی فضیلت ثابت ہوتی ہے۔ حضرت عبداللہ بن عباس فرماتے ہیں: ۔دار العلم ساعة” تمن الليل خير تم إحيائها دارمی)رات کو تھوڑی دیرعلم قرآن وحدیث کا حاصل کر لینا رات بھر عبادت کرنے سے بہتر ہے حضرت علقمہ فرماتے ہیں کہ حدیث کاندا کر کیا کرو کیونکہ علم مذاکرہ سے خوش مارتا ہے
(جامع البیان)

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: