فرمان رسول اے اللہ! میں عثمان سے راضی ہوں


حضرت عثمان غنی نے عہد جاہلیت ہی میں شراب اپنے اوپر حرام کر لی تھی ۔ اور نہ ہی کبھی عہد جاہلیت میں بھی زنا کے پاس تک نہیں تھے، نہ کبھی چوری کی ۔ عہد جاہلیت میں بھی ان کی سخاوت سے لوگ ہمیشہ فیض یاب ہوتے رہتے تھے۔

ہر سال حج کو جاتے منی میں اپناخیمہ نصب کراتے ۔ جب تک حجاج کو کھانا نہ کھا لیتے ، واپس اپنے خیمے میں نہ آتے اور یہ وہ دعوت صرف اپنی جیب خاص سے کرتے ۔ جیش العمرة کا تمام سامان عثمان غنی نے مہیا فرمایا تھا۔نبی اکرم اور اہل بیت نبوی پر بار بار قاقہ کی مصیبت آتی تھی ۔ اور اکثر موقعوں پریشان ہی واقف ہو کر ضروری سامان بھجواتے تھے۔ نبی اکرم نے بارہا ان کے لیے دعا کی ہے کہ اے اللہ میں عثمان سے راضی ہوں تو بھی اس سے راضی ہو جا۔ اے اللہ! میں عثمان سے راضی ہوں ۔ تو بھی اس سے راضی ہو جا۔ ایک مرتبہ یہ دعا آپ شام سے اب تک کہتے رہے ۔ ایک مرتبہ خلاف صدی میں سخت قحط پڑا۔ لوگوں کو کھانا اور غلہ دستیاب نہ ہونے کی سخت تکلیف ہوئی ۔ ایک روز خبرمشہور ہوئی کہ عثمان غنی کے ایک ہزار اونٹ غلہ ست لدے ہوئے آئے ہیں۔ مدینہ کے تاجر فورأ عثمان کے پاس پہنے اور کہا کہ ہم وہ بوڑھے نفع سے غلہ دے دو یعنی جس قدرم کوغلہ سوروپہ میں پڑا ہے، ہم سے اس کے ڈیڑھ سو روپے لے لو۔ عثان غنی نے کہا کہ تم سب لوگ گواہ رہو کہ میں نے اپنا تمام غلہ فقراء ومساکین مدینہ کو دے دیا ہے۔ .عبداللہ بن عباس فرماتے ہیں کہ اسی شب میں نے خواب دیکھا کہ نبی اکرم ایک گھوڑے پر سوار جارہے ہیں ۔ میں دوڑ کر آگے بڑھا اور عرض کیا مجھ کو آپ کی زیارت کا بے حد اشتیاق تھا۔ آپ نے فرمایا کہ مجھے جانے کی جلدی ہے۔ عثمان نے آج ایک ہزار اونٹ غلہ صدقہ دیا ہے اور اللہ تعالی نے اس کو قبول فرما کر جنت میں ایک حور کے ساتھ ان کا عقد کیا ہے۔ اس عقد میں شریک ہونے جارہا ہوں ۔حضرت عثمان غنی ” جب سے ایمان لائے ، آخر وقت تک برابر ہر جمعہ کو ایک غلام آزاد کرتے رہے۔ بھی اگر کسی جمعہ کو آزاد نہ کر سکے تو اگلے جمعہ کو دو غلام آزاد کیے۔ محاصرہ میں بھی جبکہ بلوائیوں نے آپ پر پانی تک بند کر رکھا تھا، آپ نے غلاموں کو برابر آزاد کیا۔ ایک مرتبہ آپ نے اپنے غلام سے کہا کہ میں نے تیرے اوپر زیادتی کی تھی، و مجھ سے اس کا بدلہ لے لے۔ غلام نے آپ کے کہنے سے آپ کے کان پڑے۔ آپ نے اس سے کہا کہ بھائی! خوب زور سے پکڑ و دنیا کا قصاص آخرت کے بدلہ سے بہر حال آسان ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: