خدا ترس خلیفہ

خلیفہ ہشام بن عبدالملک نہایت خداترس سادہ مزاج اور غرور و تمکنت سے پاک تھا اور غلطی کوفوری تسلیم کر لیتا تھا۔ ایک دفعہ وہ ایک معزز آدمی کو گالی دے بیٹھا۔

اس شخص نے بگڑ خلیفہ وقت ہوکر گالی دیتے ہو۔ہشام سخت شرمندہ ہوا اور اسے کہنے لگا۔ تم مجھ سے اس زیادتی کا بدلہ لے لو۔ وہ بولا اس کا مطلب یہ ہے کہ میں بھی آپ کی طرح یہ نامناسب حرکت کروں۔ ہشام بولا کچھ مال بطور جرمانہ قبول کرلو۔ وہ بولاعزت کے بدن مال لیا مجھے منظور نہیں۔ . بالآخر ہشام نے درخواست کی خدا کے واسطے معاف کر دو۔ وہ شخص کہنے لگا مجھے یہ منظور ہے۔ میں خدا کے واسطے اور تمہارے واسطے معاف
کرتا ہوں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: