امام ابو حنیفہ کے دیانت کا ایمان افروز واقعہ

ایک مرتبہ مدینۂ منورہ سے ایک شخص اپنی ضرورت کا سامان لینے کے لئے کوفہ آیا اسے ایک خاص قسم کا کپڑا چاہئے تھا اسے بتایا گیا کہ اس طرح کا کپڑاصرف امام ابو حنیفہ کے پاس ہی ملے گا اور لوگوں نے اسے بتایا کہ جب تم امام صاحب کی دکان پر جاؤ تو جس قیمت میں وہ کپڑا دیں لے لینا .

کیونکہ ان کے ساتھ تمہیں بھاؤ تاؤ کی ضرورت پیش نہیں آئے گی۔شاگرد سے وہ شخص آپ کی دکان پر پہنچا تو امام صاحب کے ایک ملاقات ہوئی۔ اس نے خیال کیا شاید یہی امام ابو حنیفہ ہیں۔ اس نے کپڑا مانگا، شاگرد نے کپڑا سامنے لارکھا۔ اس نے قیمت پوچھی،شاگرد نے ایک ہزار درہم بتائی۔ اس شخص نے ایک ہزار درہم دئیے اور اپنی ضرورتوں سے فارغ ہو کرمدینۂ منورہ واپس آگیا۔ کچھ دنوں کے بعد امام صاحب نے وہی کپڑا طلب فرمایا تو شاگرد نے بتایا: میں نے تو اسے فروخت کردیا ہے۔ آپ نے پوچھا: کتنے میں بیچا؟ اس نے کہا: ایک ہزار درہم میں۔آپ نے شاگرد سے فرمایا: میری دکان میں رہتے ہوئے لوگوں کو دھوکا دیتے ہو! چنانچہ آپ نے اسے اپنی دکان سے الگ کردیا اور خود ایک ہزار درہم لے کر مدینۂ منورہ پہنچ گئے اوراس شخص کو تلاش کرنے پراسے اسی کپڑے کی چادر اوڑھے نماز پڑھتے ہوئے پایا۔ آپ نے بھی نوافل پڑھنے شروع کردئیے وہ نماز سے فارغ ہوا تو آپ نے فرمایا: یہ کپڑا جو تم نے اوڑھ رکھا ہے وہ میرا ہے،اس نے کہا: وہ کیسے؟ میں تو اسے کوفہ میں امام ابو حنیفہ کی دکان ایک ہزار درہم میں خریدکرلایا ہوں۔ آپ نے پوچھا: تم ابو حنیفہ کو دیکھو گے تو پہچان لو گے؟ اس نے کہا: کیوں نہیں! آپ نے فرمایا: میں ہی ابوحنیفہ ہوں، کیا تم نے مجھ کپڑا خریدا تھا؟ اس نے کہا:نہیں ! آپ نے فرمایا :تم اپنے پیسے لے لو اور میرا یہ کپڑا مجھے دے دو اور اسے سارا واقعہ کہہ سنایا۔

اس نے کہا:میں تو اس کپڑے کو کئی مرتبہ پہن چکا ہوں اورمجھے اچھا نہیں لگ رہا کہ کپڑا واپس کروں۔ اگر آپ چاہیں تو مزید اور پیسے لے لیں۔آپ نے اس سے فرمایا :میں زیادہ لینا نہیں چاہتا۔ کپڑے کی قیمت چار سو درہم ہے۔ اگر تم چاہو تو چھ سو درہم واپس لے لو اور یہ کپڑا تمہارا رہے گایا پھر تم اپنے ہزار لے لو اور کپڑا مجھے واپس کردو اور جو تم نے اسے استعمال کیا تو تمہیں اس کی اجازت تھی مگر اس شخص نے کپڑا دینے سے انکار کردیا اور کہنے لگا: میں اس کپڑے کو ہزار درہم میں لینے پر راضی ہوں۔ لیکن اب آپ نے انکار کردیا ،بالآخر اس شخص نے کہا:اگر ایسا ہی ہے تو آپ 600 درہم مجھے دے دیجئے، چنانچہ آپ نے اسے 600 درہم دئیے اور کپڑا اس کے پاس چھوڑ کر کوفہ واپس تشریف لے آئے

(مناقب الامام الاعظم ابی حنیفۃ للموفق، جزء1، ص198)

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: