انوکھامنبر

میں حضرت سیدنا احمد بن ثابت علیہ رحمۃ اللہ الواحد فرماتے ہیں نبی کریم صلی اللہ تعالی علیہ والہ وسلم پر درود پاک پڑھنے سے متعلق جو مشاہدات مجھے کرائے گئے ان میں سے ایک یہ بھی ہے کہ میں نے خواب میں دیکھا کہ جنگل میں ایک منبر ہے جس پرمیں چڑھ بیٹھا .

جب میں اس کی سیڑھیوں پر چڑھ گیا تومیں نے زمین کی طرف نظر کی تو کیا دیکھتاہوں کہ زمین سے ڈور ہوا میں ایک منبر ہے میں کئی درجے اوپر چڑھ گیا جب مڑکر دیکھا تو صرف وہ درجہ نظر آیا جس پر میرے پاؤں تھے باقی کچھ نظر نہ آیا نے درود وسلام کا واسطہ دے کر اللہ عزوجل کی بارگاہ دعاکی یااللہ عزوجل ! مجھے سلامتی کی راہ چلا اتنے پل صراط کی مانند ایک سیاہ دھاگہ دکھائی دیا میں نے دل میں نے سوچا کہ ہو نہ ہو یہ پل صراط ہے جس نے مجھے آ گھیرا ہے میرے پا س اللہ عزوجل کے فضل وکرم اور رسول اکرم صلی اللہ تعالٰی علیہ والہ وسلم پر درود وسلام کے سوا کوئی عمل ایسا نہیں تھا جو اس کٹھن اور دشوار گزار منزل کو عبور کرنے میں کام آئے ۔اتنے میں ہاتف غیبی سے یہ آواز سنائی دی کہ اگرتم اس منزل کوغبور کرلو تو اس پار رسول اکرم صلی اللہ تعالی علیہ والہ وسلم اور آپ کے صحابۂ کرام علیھم الرضوان کی ملاقات سے مشرف ہوگے یہ بات سن کرمیں پھولے نہ سمایا اور میں نے اللہ عزوجل کی جناب میں درود و سلام کا و وسیلہ پیش کیا تو دفعہ مجھے ایک پورانی بادل نے اٹھا کر رسول اکرم صلی اللہ تعالٰی علیہ والہ وسلم کے قدموں میں لا ڈالا، کیا دیکھتا ہوں کہ سرکار علیہ السلام تشریف فرما ہیں اور آپﷺ کے دائیں جانب

حضرت سیدنا صدیق اکبر رضی اللہ تعالی عنہ بائیں جانب حضرت سیدنا فاروق اعظم رضی اللہ تعالی عنہ آپ کے عقب میں حضرت سیدنا عثمان غنی رضی اللہ تعالٰی عنہ موجود ہیں اور حضرت مولائے كائنات علی المرتضی شیر خدا کرم اللہ تعالٰی وجہہ الکریم بھی آپﷺ کے رُوبرو کھڑے ہیں میں نے عرض کی حضور! میرے ضامن ہو جائیں تو فرمایا میں تمہارا ضامن ہوں اور تمہارا خاتمہ بالخیر ہوگا پھر میں نے دعا کی درخواست کی تو آپ علیہ السلام نے ارشاد فرمایا مجھ پر کثرت سے درود پاک پڑھنا لازم کرلو اور فضولیات سے کنارہ کشی اختیار کرو –

(سعادة الدارين ،الباب الرابع فيما ورد من لطائف المرائي الخ، اللطیفۃ السابعۃ، ص۱۲۵)

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: