رمضان کے ادب پر ایمان و جنت نصیب

نزہۃ المجالس‘‘ کتاب میں ایک واقعہ لکھا ہے کہ ایک مجوسی تھا۔ یہ وہ وقت تھا جب مسلمان غالب تھے مگر کفاران کے درمیان رہتے تھے ایک مرتبہ نجوسی کے بیٹے نے رمضان المبارک کے دنوں میں کھانا کھایا

جب اس نے کھلے عام کھانا کھایا تو اس نجوسی کو بہت غصہ آیا اس نے بیٹے نے اس کو ڈانٹ ڈپٹ کی کہ تجھے حیا نہیں آتی کہ یہ مسلمانوں کا مقدس مہینہ ہے وہ دن میں روزہ رکھتے ہیں اور تو دن میں اس طرح کھلے عام کھارہا ہے خیر بات آئی گئی ہوگئی ۔ اس مجوسی کے پڑوس میں ایک گزرگ رہتے تھے جب اس مجوسی کا انتقال ہو گیا توان بزرگ نے اس کو خواب میں دیکھا کہ وہ مجوسی جنت کی بہاروں میں ہے وہ بڑے حیران ہوۓ اس سے پوچھنے لگے کہ آپ تو مجوی تھے اور میں آپ کو جنت میں دیکھ رہا ہوں وہ جواب میں کہنے لگا کہ ایک مرتبہ میرے بیٹے نے رمضان المبارک میں کھلے عام کھانا کھایا تھا اور میں نے رمضان المبارک کے ادب کی وجہ سے اس کو ڈانٹا تھا اللہ تعالی کو میرا عمل اتنا پسند آیا کہ موت کے وقت مجھے کلمہ نصیب فرمادیا اس طرح مجھے اسلام پرموت آئی اور اب میں جنت کے مز لے رہا ہوں ۔ ( خطبات ذوالفقار ۹/۲۷۹)

Leave a Reply

Your email address will not be published.

%d bloggers like this: